مقبوضہ کشمیر، بھارتی فوجیوں کی فائرنگ سے زخمی ہونیوالا نوجوان چل بسا


سرینگر(آن لائن)مقبوضہ کشمیر کے ضلع شوپیاں میں بھارتی فوجیوں کی فائرنگ سے حال ہی میں زخمی ہونے والا نوجوان سرینگر کے ایک ہسپتال میں چار روز تک زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعدآج چل بسا۔ میڈیاپورٹس کے مطابق بھارتی فوجیوں نے 27جنوری کو ضلع شوپیان کے علاقے گنو پورہ میں پرامن مظاہرین پر فائرنگ کرکے دو نوجوانوں20سالہ جاوید احمد بٹ اور 24سالہ سہیل جاوید لون کو شہیدجبکہ متعدد کو زخمی کردیاتھا ۔ایک 19سالہ زخمی نوجوان رئیس احمد گنائی کو سرینگر کے صورہ ہسپتال کی انتہائی نگہداشت وارڈمیں منتقل کیا گیا تھا جہاں وہ آج صبح زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔رئیس گنائی کی شہادت سے شوپیاں میں فائرنگ سے شہید ہونے والے نوجوانوں کی تعداد بڑھ کر تین ہو گئی۔صورہ ہسپتال کے ایک ڈاکٹر نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں کو بتایا کہ رئیس احمد کے سر میں گولی لگی تھی جس کے باعث انکا دماغ بری طرح متاثر ہوا تھا ۔دریں اثنا دختران ملت کی جنرل سیکرٹری ناہیدہ نسرین نے سرینگر میں ایک بیان میں شوپیاں میں نوجوانوں کے قتل کے واقعے کی تحقیقات کے قابض انتظامیہ کے علان کو مسترد کر دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقات کا اعلان انتظامیہ کا ایک اور ڈرامہ ہے جسکا واحد مقصد لوگوں کے غم وغصے کو کم کرنا ہے
مقبوضہ کشمیر

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...