تورڈھیر ‘ مچھلیوں کا غیرقانونی شکار پر 3 افرادکے خلاف پرچہ جات درج

تورڈھیر ‘ مچھلیوں کا غیرقانونی شکار پر 3 افرادکے خلاف پرچہ جات درج

تورڈھیر(نمائندہ خصوصی)مچھلیوں کا غیرقانونی شکار پر 3 افرادکے خلاف پرچے درج،3 جنریٹرز ضبط،اویس،ادریس اور ضابط سمیت کئی شکاری فرار۔اس سلسلے میں انسپکٹرفشریز صوابی فاروق خان نے ٹیلی فونک رابطہ میں سینئر صحافی ظفراقبال سائل کوتفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا ہے کہ انہیں خفیہ اطلاع ملی کہ بمقام بیکادریائے سندھ ’اباسین‘میں جنریٹرز کیذریعے چندشکاری غیرقانونی طورپرمچھلیوں کا شکارکررہے ہیں چنانچہ انہوں نے دیگرسٹاف کے ہمراہ فوراًموقع پر پہنچ کر اظہرعلی ولدعیسیٰ خان،شاہ فہدولدنثار اوراورنگزیب ولد فضل قادرملک ساکنان گاؤں صلاح کے قبضے سے3 جنریٹرزبرآمدکرکے سرکاری تحویل میں لے لئے جبکہ اویس ولد نامعلوم، ادریس اورضابط پسران میراکبرساکنان بیکااورکئی دیگرافرادغیرقانونی آلات شکارکے ہمراہ فرارہوگئے انسپکٹرفاروق خان نے مزید بتایا ہے کہ چالان مکمل کرکے جلداسسٹنٹ کمشنر لاہورکو پیش کردینگے جبکہ برآمدشدہ جنریٹرز اے سی لاہور کو پیش کردئیے ہیں یاد رہے کہ 28 دسمبرکو بھی تورڈھیرکے رہائشی اسلام نامی شخص سے مچھلیوں کے غیرقانونی شکار کی پاداش میں جنریٹرضبط کرکے اسے 5 ہزار روپے جرمانہ کیا جاچکا ہے واضح رہے کہ گزشتہ سال بھی سرکاری طورپر لاکھوں روپے مالیت کی قیمتی مچھلیوں کی ہزاروں بچ اباسین میں پرورش کیلئے چھوڑدی گئی ہے جبکہ جنریٹر، ڈائنامیٹ اورطوفان جال کیذریعے مچھلیوں کا شکار غیرقانونی ہے جس سے چندمچھلیاں شکارکرکے سینکڑوں بچ مچھلی ہلاک کردی جاتی ہیں جسکی سزا جنریٹرز ضبط، 6 سال قید اور5 ہزار روپے جرمانہ ہے جبکہ کھنڈہ یا فش راڈ کی مدد سے بھی شکارکرنے کیلئے متعلقہ مقامی حکام سے پیشگی اجازت لازمی ہے انسپکٹرفشریزفاروق خان نے اس اَمرپر بھی نہایت دکھ اورافسوس کااظہار کرتے ہوئے بتایا ہے کہ چندروزقبل یکم جنوری کومقامی پولیس سٹیشن کا ایک تھانیدارخود بھی پولیس موبائل میں ہی جاکربمقام گاؤں جبرجنریٹرکیذریعے مچھلیوں کا غیر قانونی شکار کرتاہواپایا گیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر