میونسپل کارپوریشن کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی، گالی گلوچ، ایوان مچھلی منڈی بنارہا

ملتان (سپیشل رپورٹر) میونسپل کارپوریشن ملتان کے ہنگامہ خیز اجلاس میں کنونئیر سعید انصاری نے میئر گروپ کی جانب سے بنائی جانیوالی 26کمیٹیاں توڑنے کا اعلان کردیا جبکہ میئر ملتان نوید الحق آرائیں نے چیئرمینوں کی ہنگامہ آرائی اور گالم گلوچ کا ذمہ دار گورنر پنجاب رفیق رجوانہ اور ایم پی اے رانا محمود الحسن کو قرار دے دیا، میئر گروپ کے چیئرمینوں نے کنونیئر پر دھاوا بول دیا اور ایک گھنٹے تک ان کا گھیراؤ کر کے ایوان کی کاروائی کو روکے رکھا۔ چیئرمین رانا سجاد نے سعید انصاری کو کرسی سے اٹھا کر خودبیٹھ گئے جس پر ایوان میں مزید ہلڑ بازی شروع ہو گئی ہے۔ ملتان ڈویلپمنٹ گروپ اور پی ٹی آئی کے چیئرمین کنونئیر کے دفاع کیلئے سٹیج پر چڑھ گئے۔ دونوں اطراف سے گو عمران گو، گو نواز گو سمیت گلی گلی میں شور ہے میئر ملتان چور ہے ، سعید انصاری غدار ہے کے نعروں سے ایوان مچھلی منڈی بن گیا۔ چیئرمینوں میں دوبدو لڑائی روکنے اور ہلڑبازی میں ایک گھنٹہ سے زائد وقت گزرنے پر کنونئیر سعید انصاری نے اجلاس ملتوی کردیا۔ گذشتہ روز ملتان ڈویلپمنٹ گروپ کی درخواست پر میونسپل کارپوریشن کا اجلاس ہوا جس کی صدارت کنونئیر و ڈپٹی میئر سعید انصاری نے کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کنونئیر سعید انصاری نے کہا ہے اقتدار کانٹوں کی سیج ہے اللہ جس کو نوازتا ہے اس پر ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں کہ ذاتیات سے بالا تر ہو کر عوام کی خدمت کرے۔ ہم 13ماہ میں عوام کو خاطر خواہ نتائج نہیں دے سکے ہیں ہم نے عوام کی خدمت کا حلف اللہ تعالیٰ کو دیا ہے جس کا حساب دنیا میں بھی ہوگا اور آخرت میں بھی ہوگا۔ کنونئیر کے خطاب کے دوران چیئرمین رانا سجاد ڈیسک پر کھڑے ہو گئے اور کہا کہ یہاں چیئرمین اس خطاب کیلئے ہیں ہے اجلاس کی کاروائی شروع کی جائے جس پر ملتان ڈویلپمنٹ گروپ کی طرف سے مرزا سرفراز بیگ، جلیل خان، اختر عالم قریشی، اعجاز رجوانہ، ماسٹر سعید انصای، شیخ رفیق، حامد ارائیں، اعجاز فخر، رسالت شیر وانی، رانا اشرف تاج، عدنان ڈوگر، اعجاز ججی ڈوگر، بابر شاہ، ضرار خان، شیخ فیاض، عمران رشید سلہری، شکیل لابر، اور میئر گروپ کے چیئرمین رانا سجاد، رانا افضل، چوہدری اقبال، چوہدری ستار، شیخ ندیم اکبر، واصف بٹ ودیگر نے آمنے سامنے کھڑے ہو کر اور پھر ڈیسکوں پر کھڑے ہو کرنعرے بازی شروع کردی جس سے ایوان میں کان پڑی آواز سنائی نہیں دیتی تھی، کنونئیر سعید انصاری نے نئے تعینات ہونے والے چیف آفیسر سردار نصیر کو اسٹیج پر تعارف کرانے اور لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2013کے سیکشن 68سب سیشن 5,6کی تشریح کرنے کی ہدایت کی۔ چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن سردار نصیر نے کہا کہ ایوان کی تمام کاروائی چیف آفیسر یا نمائندہ کاروائی لکھ کرکنونئیر سے دستخط کروائے گا اور بغیر دستخط کاروائی غیر قانونی ہے، کسی بھی اسٹیشن پر میری تعیناتی پہلی بار ہوئی ہے اور پہلا ہی اجلاس ہنگامہ خیز ہوا ہے تمام ممبران سے گزارش ہے کہ ادارے کا احترام کریں۔ کنونئیر سعید انصاری نے ملتان ڈویلپمنٹ گروپ کے 47چیئرمینوں کے دستخطوں پر مشتمل قرارداد کے تحت میئر گروپ کی جانب سے بنائی جانیوالی 26کمیٹیوں کے توڑنے کا اعلان کردیا جس پر ہنگامہ آرائی دوبارہ شروع ہو گئی چیئرمینوں کے درمیان گالم گلوچ کا آغاز ہوتے ہی نوبت ہاتھا پائی تک پہنچ گء، رانا سجاد، رانا افضل، ملک رضوان، افتخار جاوید، لعل اکبر سمیت دیگر چیئرمینوں نے کنونئیر کو دھکے دیکر کرسی سے اٹھا دیا اور رانا سجاد خود کرسی پر بیٹھ کر تصاویر بنواتے رہے، کنونئیر سعید انصاری نے میز پر چڑھ کر جان بچائی، اعجاز عرف ججی ڈوگر، ضرار خان، ملک عدنان ڈوگر، رانا اشرف تاج، ماسٹر سعید انصاری، اعجاز فخرسمیت دیگر چیئرمین سعید انصاری کو تشدد سے بچاتے رہے۔ چیئرمینوں کے درمیان گو نواز گو، گوعمران گوکے نعرے لگتے رہے، ملتان ڈویلپمنٹ گروپ کے چیئرمین رانا تاج نے کہا کہ ہائی لیول کے بجائے لوکل نعرے لگائیں جس پر گلی گلی میں شور ہے میئر ملتان چور ہے، ملتان ڈویلپمنٹ گروپ زندہ باد کے نعرے لگتے رہے۔ ہنگامہ آرائی کے بعد اجلاس تقریبا ایک گھنٹہ رکا رہا اور میئر گروپ کی طرف سے ڈائس کا قبضہ نہ چھوڑنے اور پر تشدد لڑائی کو روکنے کیلئے کنونئیر سعید انصاری نے اجلاس ملتوی کرنے کا اعلان کردیا، ایوان کی حاضر رپورٹ میں ملتان ڈویلپمنٹ گروپ کے 43 چیئرمین جبکہ میئر گروپ کے 37چیئرمین ایوان میں حاضر تھے۔ایوان سے باہر جاتے ہوئے میئر گروپ کے چیئرمینوں نے میئر ملتان نوید الحق آرائیں اور ڈپٹی میئر منور احسان کو کندھوں پر اٹھا لیا اور زندہ باد کے نعرے لگاتے ہوئے ایوان سے چلے گئے۔ 

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...