گیس بحران، محکمہ دادرسی کے بجائے صارفین کے میٹر اتارنا شروع کردئیے

گیس بحران، محکمہ دادرسی کے بجائے صارفین کے میٹر اتارنا شروع کردئیے

ملتان (سٹاف رپورٹر)’’ نہ رہے گا بانس ‘ نہ رہے گی بانسری‘‘ سوئی گیس افسران نے گیس کی غیر اعلانیہ طویل لوڈشیڈنگ کی شکایات کرنے والے صارفین کی دادرسی کرنے کی بجائے ان کے میٹر اتارنا شروع کر دئیے۔بتایا گیا ہے کہ ملتان اور گردونواح میں سوئی گیس کی لوڈشیڈنگ کا بحران بد ترین ہو گیا ہے ۔ملتان سمیت جنوبی پنجاب کے بیشتر علاقوں میں سوئی گیس کی شدیدلوڈشیڈنگ کی جا رہی ہے جس کے باعث صارفین ایل پی جی اور لکڑیاں جلانے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔ اس کے علاوہ ایل پی جی کی قیمتوں میں مسلسل اضافے سے بھی صارفین پریشان ہیں کیونکہ گیس سلنڈر کا استعمال بہت مہنگا پڑ رہا ہے ۔اس صورتحال میں جو صارفین سوئی گیس دفتر جا کر شکایت کرتے ہیں تو افسر اور اہلکار ان کی دادرسی کرنے کی بجائے ان کو نشانے پر رکھ لیتے ہیں اور سوئی گیس کی ظالمانہ لوڈشیڈنگ ختم کرنے کی بجائے ان کے میٹر اتار لئے جاتے ہیں ۔صارفین کو بتایابھی نہیں جاتا اور چپکے سے باہر سے ان کے میٹر اتارلئے جاتے ہیں ۔ پریشان حال صارفین جب سوئی گیس دفتر جاتے ہیں تو ان سے کہاجاتا ہے کہ ’’تم کمپریسر استعمال کر رہے ہو ‘ اس لئے تمہارا میٹر اتار لیا گیا ہے‘‘ اس پر صارفین نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ کمپریسر کے استعمال کے ذمہ دار خود سوئی گیس افسران ہیں کیونکہ اگر وہ گیس صحیح طریقے سے فراہم کریں تو کوئی صارف بھی کمپریسر استعمال نہیں کرے گا ۔ کمپریسر وہی استعمال کرتے ہیں جن کے ہاں گیس کا پریشر نہیں ہوتا ۔ صارفین نے ایم ڈی سوئی گیس اور وزارت قدرتی وسائل کے حکام سے نوٹس لینے اور دادرسی لینے کی استدعا کی ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...