کشمیر انسانی بنیادوں پر فوری حل طلب مسئلہ ہے ،مولاناعبدالعزیز


مظفرآباد(بیورورپورٹ) کشمیر انسانی بنیادوں پر فوری حل طلب مسئلہ ہے ،بھارت دہشتگردانہ کارروائیوں میں معصوم ،نہتے انسانوں کا قتل عام کررہاہے ،اقوام متحدہ مسلمانوں کے جذبات کے ساتھ کھلواڑکررہی ہے۔اپنی ہی پاس کردہ قراردادوں پر عمل درآمد کروانے سے قاصرہے۔آزادی کشمیر کیلئے حکومت اور عوام کو مظلوم کشمیریوں کی ہر ممکن مددوحمایت کرنا ہو گی۔ان خیالات کا اظہار امیر جماعۃا لدعوہ آزادکشمیر مولاناعبدالعزیزعلوی نے گزشتہ روزصحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ مسئلہ کشمیر خطے میں امن و سلامتی کا مسئلہ ہے۔جہاں روزانہ کی بنیادپر ہندوبنیا نہتے کشمیریوں کو موت کے گھاٹ اتاررہاہے۔عالمی برادری ،انسانی حقوق کے عالمی چیمپن ،اقوام متحدہ سب کے سب اس قتل عام پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔یہ مسئلہ دو ایٹمی طاقتوں کے درمیان ہے جو کسی بھی وقت ایک ہلکی سی چنگاری سے پورے خطے کے لیے تباہ کن ثابت ہوسکتاہے۔دنیا میں امن قائم کروانے اور رکھنے کے ٹھیکیدار سترسال سے کیوں اس مسئلے کو حل نہیں کررہے۔کیوں کشمیریوں کو ان کا پیدائشی حق حق خودارادیت نہیں دیا جارہا۔ایک طرف حیلے بہانوں سے اس مسئلے کو پس پشت ڈالنے کی کوشش کی جارہی ہے اور دوسری طرف بھارتی فورسز کشمیریوں کا قتل عام کررہی ہیں۔اگر وہ اپنے حقوق کے لیے جدوجہد کرتے ہیں تو انہیں دہشت گرد قراردیا جاتاہے۔یہ سب اس لیے ہوتاہے کیونکہ آزادکشمیر کی حکومت اس کو اپنا مسئلہ ہی نہیں سمجھتی۔انہوں نے کہا کہ بیان بازی کے لیے ،سیاست چمکانے کے لیے ،اقتدار حاصل کرنے کے لیے مسئلہ کشمیر کو کورایشو قراردیا جاتاہے جب یہ سب مل جاتاہے تو پھر مسئلہ کشمیریوں کو غاصب بھارت سے آزادی کیلئے کوئی عملی اقدامات نہیں کئے جاتے اور پھر کسی وکیل کو یا بیس کیمپ کی سرکار کو کوئی سروکار نہیں رہتاہے کہ روز کتنے کشمیری شہید ہوئے۔کتنے گھر جلائے گئے۔کتنی ماؤں بہنوں کی عصمت دری کی گئی۔اگر کوئی حافظ محمد سعید کشمیرکی آزادی کی بات کرے تو اس پر پابندیاں اور نظربندیاں۔خدا کے لیے اس مسئلے کو انسانیت کا مسئلہ سمجھیں نہ کہ حصول اقتدار کا ذریعہ۔اس وقت سب سے بڑی ذمہ داری آزادخطہ کے حکمرانوں اور عوام کی ہے کہ وہ اپنے مظلوم بہن بھائیوں کی مدد کے لیے میدان عمل میں آئیں۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...