زینب قتل کیس، وہ وقت جب ملزم عمران کی والدہ اسے گرفتارکروانے پر تیار ہوگئی لیکن پھر۔ ۔ ۔ تہلکہ خیز انکشاف منظرعام پر

قصور(ویب ڈیسک) قصور کی ننھی زینب کا قاتل عمران پکڑا گیا جس پر زینب کے والد نے بھی ملزم کو پکڑانے کا دعویٰ کیا تھا لیکن پولیس ذرائع نے اس کی تردید کردی اور انکشاف کہ ایک کروڑ روپے انعام کا اعلان ہونے پر ملزم کے چچا کے کہنے پر انعام کی رقم پانے کے لیے ایک وقت ملزم کی والدہ بھی گرفتار کرانے پر تیار ہوگئی تھی لیکن پھر انکاری ہوگئی جس کے بعد عمران علی گھر سے فرار ہوگیا۔
روزنامہ 92نیوز کے مطابق پولیس کے ایک سنیئر افسر نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ قتل وریپ ملزم کا انفرادی فعل تھا،گرفتاری کے بارے میں سینئر افسر نے بتایا کہ زینب کی نعش کی برآمدگی کے بعد جب پنجاب حکومت نے ملزم کی گرفتاری کے لئے ایک کروڑ انعام کا اشتہار دیاتو ملزم کے حقیقی چچا نے شک اور ملزم کا ماضی دیکھتے ہوئے اس کی والدہ سے بات کی کہ انعام کے خاطر اس کو گرفتارکرادیتے ہیںپہلے تو ماں مان گئی لیکن بعد میں اس نے انکار کردیاجس کا ملزم کو پتہ چلا تو گرفتاری سے بچنے کیلئے وہ پاکپتن چلا گیاتھا۔
انہوں نے مزید بتایا کہ زیب کے والد نے دعویٰ کیا ہے انہوں نے ملزم کو گرفتار کرایاجس میں صداقت نہیں،ملزم کو ڈی این اے مثبت آنے پر پکڑ اگیا۔انعام کی رقم لینے کیلئے تمام لوگ اپنے اپنے دعوے کر رہے ہیں،ملزم کریمنل ذہین کا مالک ہے،یہ درندہ اپنی ہوس کیلئے چھوٹی بچیوں کا انتخاب کرتا تھا۔ملزم کا کسی مافیایا گینگ سے ابھی تک کو ئی تعلق ثابت نہیں ہو سکا۔

مزید : علاقائی /پنجاب /قصور

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...