ہائی کورٹ نے نئے چیئرمین واپڈا اور ممبران کی تعیناتیاں روک دیں ،مشترکہ مفادات کونسل کو طریقہ کار وضع کرنے کا حکم

ہائی کورٹ نے نئے چیئرمین واپڈا اور ممبران کی تعیناتیاں روک دیں ،مشترکہ ...
ہائی کورٹ نے نئے چیئرمین واپڈا اور ممبران کی تعیناتیاں روک دیں ،مشترکہ مفادات کونسل کو طریقہ کار وضع کرنے کا حکم

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(نامہ نگار خصوصی )چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے مشترکہ مفادات کونسل کو 6ماہ میں چیئرمین واپڈا اور ممبران کی تعیناتیوں کا طریقہ کار وضع کرنے کی ہدایت کر دی،فاضل جج نے موجودہ طریقہ کار کے تحت نئے چیئرمین واپڈا اور ممبران کی تعیناتیاں روکتے ہوئے قرارد یا کہ عدالت کی طرف سے فراہم کئے گئے راہنمااصولوں کو نظر انداز نہ کیا جائے ۔

چیف جسٹس نے 14صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کیا ہے جس میں عدالت نے وفاقی حکومت اور واپڈا کو قومی اور عوامی مفاد میں عدالتی حکم پر من و عن عمل کرنے کی ہدایت کی ہے ۔درخواست گزاروں کی طرف سے موقف اختیار کیا گیا تھا کہ وفاقی حکومت نے چیئرمین واپڈا، ممبر فنانس اور ممبر واٹرکو قوانین اور میرٹ کے برعکس تعینات کیا،1958 ءسے چیئرمین واپڈا اور ممبران کی تعیناتیوں کا کوئی طریقہ کار ہی موجود نہیں ،عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے قراردیا کہ آئندہ چیئرمین واپڈا اور ممبرا ن کا تعین میرٹ پر کیا جائے اور اس حوالے سے تعیناتیوں کا طریقہ کار مشترکہ مفادات کونسل وضع کرے گی ۔اس بابت کونسل کو 6ماہ کی مہلت دی گئی ہے۔

لائیو ٹی وی دیکھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور