تاجروں کو جاری غیر قانونی نوٹس واپس لئے جائیں اسلام آباد چیمبر

تاجروں کو جاری غیر قانونی نوٹس واپس لئے جائیں اسلام آباد چیمبر

  



اسلام آباد ( کامرس ڈیسک ) اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی ٹریڈرز ویلفیئر ذیلی کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں سینئر نائب صدر طاہر عباسی، نائب صدر سیف الرحمٰن خان، کنوینر خالد محمود چوہدری اور مرکزی انجمن تاجراں پاکستان کے صدر اجمل بلوچ سمیت اسلام آباد کی مارکیٹوں کے صدور، جنرل سیکرٹریز اور عہدیداران نے شرکت کی۔

اجلاس میں قانون کرایہ داری پر تاجر کنونشن منعقد کرانے کا فیصلہ کیا گیا۔ ایک قرار داد کے ذریعے ایم سی آئی کی طرف سے ٹیکسوں کی مد میں کیا گیا ہزار گنا اضافہ فوری واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا اور اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ اگرایسا نہ کیا گیا تو اسلام آباد کی تاجر برادری مکمل طور پر سی ڈی اے اور ایم سی آئی کا بائیکاٹ کرے گی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر طاہر عباسی نے کہا کہ گذشتہ دنوں ایم سی آئی نے غیر قانونی طور پر مختلف ٹیکسوں اور ٹریڈ لائسنس فیس میں ظالمانہ اضافہ کر دیا ہے جس سے تاجر برادری میں اضطراب پیدا ہو گیا ہے۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ایم سی آئی موجودہ حکومت کی مشکلات میں اضافہ کرنے کیلئے ایسے اقدامات کر رہی ہیں جو قابل مذمت ہیں۔ انہوں نے مسائل حل نہ کرنے کی صورت میں تاجر برادری کی طرف سے ایم سی آئی اور سی ڈی اے کا بائیکاٹ کرنے کی تجویز کی تائیدکی۔ تاجر برادری نے اس عزم کا اظہار کیا کہ مارکیٹ یونینیں ان محکموں سے کسی قسم کا لائسنس نہیں بنوائیں گی اور اگر کوئی مسئلہ پیدا ہوا تو سی ڈی اے اور ایم سی آئی اس کی ذمہ دار ہوں گی۔آئی سی سی آئی کی ٹریڈرز ویلفیئر ذیلی کمیٹی کے کنوینر خالد محمود چوہدری نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ چار سالوں سے سی ڈی اے اور ایم سی آئی نے مارکیٹوں میں کوئی ترقیاتی کام نہیں کئے جس وجہ سے مارکیٹیں کھنڈرات میں تبدیل ہو رہی ہیں جبکہ فنڈز کے معاملہ میں دونوں محکموں میں لڑائی جاری ہے جس سے تاجر برادری کیلئے مشکلات بڑھ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایم سی آئی کا وجود آنا ہی غلط تھا۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی ٹیکس لگانے سے قبل قانونی تقاضے پورے نہیں کئے گئے۔مرکزی انجمن تاجراں پاکستان کے صدر اجمل بلوچ نے کہا کہ ایم سی آئی نے شہریوں کی زندگی مشکل بنا دی ہے کیونکہ شہر بھر میں نہ تو صفائی کا انتظام بہتر ہے نہ دیگر کام کئے جا رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مارکیٹوں میں فٹ پاتھ ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں، سیوریج لائیں خراب ہیں جبکہ پینے کا صاف پانی بھی دستیاب نہیں ہے انہوں نے وزیراعظم عمران خان سے اپیل کی کہ وہ ایم سی آئی میں ایڈمنسٹریٹر مقرر کریں اور تمام ٹیکس واپس لینے کے احکامات جاری کریں۔اجلاس میں پی ٹی آئی ٹریڈرز وینگ اسلام آباد کے صدر چوہدری ندیم الدین، جناح سپر مارکیٹ کے صدر ملک ربنواز، سپرمارکیٹ کے جنرل سیکرٹری محمد حسین، بلیوایریا کے صدر یوسف راجپوت، جی الیون مرکز کے صدر چوہدری آفتاب گجر، ای الیون کے صدر شیخ اویس، جی سیون کے صدر ملک نوید، ستارہ مارکیٹ کے سینئر نائب صدر چوہدری اشرف فرزند، بارہ کہو کے صدر نوید عباسی کے علاوہ ناصر محمود چوہدری، سید قیصر شاہ کاظمی، شیخ جاوید، محمد کاشف، چوہدری شفیق، احمد خان، محبوب خان، عبدالرحمٰن صدیقی، مشرف جنجوعہ، سلاور خان، راجہ سفیر، حامد معراج، چوہدری عرفان، راجہ ذولشام، یاسر عباسی، راجہ حسن اختر، تہماس بٹ، زاہد حمید، شمیم خان اور دیگر نے بھی خطاب کیا اور اس بات کا اعلان کیا کہ سی ڈی اے اور ایم سی آئی کی طرف سے تاجروں کے مسائل حل نہ کرنے کی صورت میں دونوں محکموں کا مکمل بائیکاٹ کیا جائے گا۔

مزید : کامرس