چائنہ سے پاکستانی طلبہ کو واپس نہ لانے کا حکومتی فیصلہ ناقابل قبول، رحمان ملک

  چائنہ سے پاکستانی طلبہ کو واپس نہ لانے کا حکومتی فیصلہ ناقابل قبول، رحمان ...

  



اسلام آباد (این این آئی) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے چیئر مین سینیٹر رحمان ملک نے سینیٹ میں چائنہ میں پھنسے پاکستانی طلبہ کے معاملے پر شدید برہمی کااظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ حکومت کا چائینہ میں پاکستانی طلبہ کو پاکستان واپس نہ لانے کا فیصلہ افسوسناک و ناقابل قبول ہے۔ ایک بیان میں سینیٹر رحمان ملک نے کہاکہ کوئی ملک کسی بھی قانون کے تحت اپنے باشندوں کو اپنے ملک واپس آنے سے نہیں روک سکتا، دوسرے ممالک اب تک اپنے باشندوں کو چائینہ سے منتقل کر چکے ہیں۔ حکومت پاکستانی طلبہ کا چائینہ میں بے بسی اور انکے والد ین کی پریشانی کو سمجھ لے،اگر حکومت محسوس کر رہی ہے طلبہ کے آنے سے کرونا وائرس پھیلے گا تو ضروری طبی انتظامات کر لیں۔ ائیرپورٹس پر ائسولیشن سنٹرز بنائے جہاں واپس آنیوالے طلبہ و دیگر مسافروں کا مکمل طبی معائنہ ہو۔ حکومت خصوصی طیارے بھیج کر پاکستانی طلبہ کو فوری طور پر چائینہ سے واپس لے آئے۔ جو طلبہ پاک چائنہ بارڈر کے قریب ہیں انکو خنجراب کے راستے پاکستان منتقل کیاجائے۔ پاکستانی طلبہ کو کرونا وائرس کیلئے سکریننگ ٹیسٹ کے بعد انکے والدین کے حوالے کیا جائے، سکریننگ کے بعد کورونا وائرس کے تصدیق کی صورت میں مکمل طبی سہولیات مہیا کی جائیں۔ پاکستانی طلبہ کو ادویات، کھانے پینے کی اشیا و محفوظ مقامات کی فراہمی کیلئے چینی حکومت سے رابطہ کیا جائے۔

رحمان ملک

مزید : پشاورصفحہ آخر