آر کائیوز اور تمام لائبر یریز کو جدید خطوط پر استوار کیا جائیگا، خلیق الرحمان

آر کائیوز اور تمام لائبر یریز کو جدید خطوط پر استوار کیا جائیگا، خلیق ...

  



پشاور (سٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ کے مشیر برائے اعلیٰ تعلیم خلیق الرحمان نے کہا ہے کہ نوجوانوں میں پڑھنے کی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے اورتعلیم و تحقیق کے شعبوں میں مزید کامیابیاں حاصل کرنے کے لیے صوبے کے آرکائیوز اور تمام لائبریریز کو جدید خطوط پر استوار کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کے طلباء، ریسرچرز اور درس و تدریس سے وابستہ لوگوں کو بذریعہ جدیدٹیکنالوجی تمام سہولیات فراہم کی جائے گی۔ جبکہ موجودہ سہولیات میں ان کو ڈیجیٹل لائبریریز، ریسرچ سہولیات، سرکاری اور نیم سرکاری اداروں کے بارے میں اہم معلومات، صوبے کے مختلف محکموں اور حکومتی رولز ریگولیشن کے بارے میں معلومات کے علاوہ نرسری سے لیکر پی ایچ ڈی لیول تک کتابوں کی وسیع ورائٹی بھی دستیاب ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈائریکٹوریٹ آف آرکایؤز اینڈ لایبریریز کے دورے کے موقع پر کیا۔ ڈائریکٹر آرکائیوز اینڈ لائبریری ظاہراللہ خان نے مشیر اعلیٰتعلیم کو ڈائریکٹریٹ کی کارکردگی اور صوبے میں مختلف لائبریریز کے بارے میں بریفنگ بھی دی۔بریفنگ کے دوران ان کو بتایا گیا کہ صوبے میں اس وقت ڈائریکٹریٹ کے علاوہ 14 لائبریریز فعال ہیں۔ جہاں پرتعلیم و تحقیق کا سلسلہ جاری ہے جبکہ چار لائبریریز عنقریب فعال ہونگی جس میں بونیر چارسدہ اور مانسہرہ کی لائبریری میں شامل ہیں۔ خلیق الرحمان نے آرکائیوز اینڈ لائبریریز کے مختلف شعبوں کا دورہ بھی کیا وہ مقابلے کے امتحانوں، سی ایس ایس اور پی ایم ایس کی تیاریوں میں مصروف طلباء و طالبات سے بھی ملے اور ان سے پشاور ڈائریکٹریٹ لائبریری میں دی جانے والی سہولیات کے بارے میں سوال کیئے۔ مشیر اعلیٰتعلیم نے ہدایت جاری کی کی کہ تمام لائبریریز میں ڈیجیٹل اصلاحات متعارف کیے جائیں اور تمام ڈیٹا کو ڈیجیٹلائز کیا جائے جبکہ ریڈرز کو ہر قسم کی سہولیات فراہم کرنے میں کوئی کوتاہی نہ ہو۔ انہوں نے مائیکرو فلمنگ اور بذریعہ جدید سکیننگ سابقہ ریکارڈ کو محفوظ بنانے اور بہترین منیجمنٹ سسٹم پر ڈائریکٹوریٹ کے عملے کی تعریف کی اور انکے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر پر حل کرنے کا عندیہ دیا۔ بریفنگ کے دوران مشیر اعلیٰ تعلیم خلیق الرحمان کو بتایا گیا کہ پشاور پبلک لائبریری میں اس وقت ایک لاکھ 25 ہزار سے زیادہ کتابیں اور پاکستان بننے کے پہلے سے لیکر اب تک تمام معلومات اور ضم شدہ قبائلی اضلاع بشمول پورے صوبے کے تمام اضلاع کے نقشہ جات بھی موجود ہیں جبکہ پانچ ہزار ریڈرز کے بیٹھنے کی گنجائش بھی اس لائبریری میں موجود ہے جبکہ خواتین اور بچوں کی سٹڈی کے لئے الگ انتظامات بھی لائبریری میں ہیں اور ماہانہ فیس بھی مناسب رکھا گیا ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر