مہنگی بجلی برآمدی سیکٹر کو متاثر کرے گی، ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز

      مہنگی بجلی برآمدی سیکٹر کو متاثر کرے گی، ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز

  



فیصل آباد (یواین پی)پاکستان ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے چیئر مین سہیل پاشا نے کہا ہے کہ برآمدی سیکٹرز کیلئے بجلی سپلائی پر سرچارجز،ٹیکسز اور فیول ایڈجسٹمنٹ کا نفاذ جہاں برآمدی ترقی کو بری طرح متاثر کرے گا وہیں اس کے برآمدات میں اضافے کی کوششوں پر بھی منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ میڈیا سے گفتگوکے دوران انہو ں نے زیرو ریٹڈ سیکٹرز کیلئے بجلی سپلائی پر فنانشل کاسٹ سرچارج، نیلم جہلم سرچارج، ٹیکسز، فکسڈ چارجز، کوارٹر ٹیرف ایڈجسٹمنٹ اور فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کے نفاذ کے پاور ڈویژن کے حالیہ اقدام پر سخت مایوسی کا اظہاکرتے ہوئے اسے صنعتی،کاروباری، تجارتی و برآمدی شعبہ کیلئے انتہائی نقصان دہ اقدام قرار دیا۔ ا نہو ں نے کہاکہ اتنی مہنگی بجلی کیساتھ بنگلا دیش، بھارت اور چائنہ جہاں 7 سے 10 سینٹ فی کلو واٹ آور بجلی دستیاب ہے سے مقابلہ کیسے ممکن ہے، اسی طرح ایکسپورٹرز جنہوں نے 7.5 سینٹ فی کلو واٹ آور کے حساب سے برآمدی معاہدے کر رکھے ہیں وہ اس نقصان کو کہاں سے پورا کریں گے۔ ا نہو ں نے بجلی کی فراہمی پر ٹیکسز اور سرچارجز کے نفاذ کے فیصلے کو فوری واپس لینے اور برآمدی صنعتوں کو 7.5 سینٹ فی کلو واٹ ٹیرف پر بجلی کی فراہمی کا مطالبہ کیا۔

مزید : کامرس /رائے