بطور گواہ عدالت پیش نہ ہونے پر ڈی ایس پی‘ 2انسپکٹرز‘ 7اہلکاروں کے بلا ضمانت وارنٹ گرفتاری

          بطور گواہ عدالت پیش نہ ہونے پر ڈی ایس پی‘ 2انسپکٹرز‘ 7اہلکاروں کے ...

  



ملتان (خبر نگار خصوصی) ایڈیشنل سیشن جج ملتان نے غیر قانونی ٹیلی فون ایکسچینج بنا کر قومی خزانے کو نقصان پہنچانے کے مقدمہ میں گواہی کے لیے پیش نہ ہونے والے(بقیہ نمبر41صفحہ7پر)

ڈی ایس پی،2 انسپکٹرز ایک ایس ایچ او سمیت 7 پولیس اہکاروں کے بلاضمانت گرفتاری وارنٹ جاری کرتے ہوئے 20 فروری کو پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔ فاضل عدالت میں پولیس تھانہ پرانی کوتوالی کے مطابق پولیس نے مخبر کی اطلاع پر ریڈ کیا جس میں ملزمان نثار خان، محمد عرفان، عبدالرشید، ارشد حسین اور محمد شہباز کو گرفتار کیا گیا۔ ملزمان سے سینکڑوں کی تعداد میں موبائل سمز اور الیکٹرانک آلات برآمد ہوئے۔ ملزمان الیکٹرونک کرائم میں ملوث پائے گئے تھے جس پر ڈی ایس پی عبدالرحیم کی مدعیت میں ملزمان کے خلاف غیرقانونی طور پر ٹیلی فون ایکسچینج بنا کر قومی خزانے کو نقصان پہنچانے کا مقدمہ 11 دسمبر 2015 میں درج کیا گیا تھا۔لیکن عدالتی حکم عدولی پر ڈی ایس پی عبدالرحیم سمیت دو انسپکٹرز راشد تھہیم، محمد صادق، ایس ایچ او منصور خان، ہیڈ کانسٹیبل محمد عارف، کانسٹیبلوں عبدالرزاق اور محمد اختر کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے تمام گواہوں کو گرفتار کرکے 20 فروری کو پیش کرنے کا حکم دیا ہے، یاد رہے کہ عدالت کی جانب سے مذکورہ گواہوں کو بارہا نوٹسز دیے جانے کے باوجود پیش نہ ہونے پر ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے ہیں۔

وارنٹ گرفتاری

مزید : ملتان صفحہ آخر