اخلاق باختہ دو امریکی اداکاروں میں خوفناک ترین بیماری کا انکشاف

اخلاق باختہ دو امریکی اداکاروں میں خوفناک ترین بیماری کا انکشاف
اخلاق باختہ دو امریکی اداکاروں میں خوفناک ترین بیماری کا انکشاف

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) مغربی معاشرے میں فحش فلموں کو عام فلموں کی طرح ہی روزمرہ زندگی کا حصہ بنالیا گیا ہے اور ہزاروں لوگوں نے ان فلموں میں کام کرنا اپنا ذریعہ معاش بنا رکھا ہے، مگر اب اس بے راہ روی کے نتائج نے بھیانک صورت اختیار کرلی ہے۔

انتہائی قابل اعتراض تصاویر بھیجنے کے بعد آدمی نے خاتون کے خلاف انوکھا مقدمہ دائر کر دیا ، ماہرین قانون کو بھی پریشان کر دیا

لاس اینجلس کے ایک فلم سٹوڈیو میں شوٹنگ کے دوران ہی انکشاف ہوا کہ دو مرد اداکار، جو ایک فحش فلم بنارہے تھے، ایڈز کا شکار ہوچکے تھے۔ اس خبر کے بعد شہر کے تمام فحش فلم سٹوڈیوز میں خوف و ہراس پھیل گیا اور ہر جگہ شرمناک کام بند کردیا گیا۔ ان فلموں کے تمام اداکاروں اور اداکاراﺅں کے ٹیسٹ کئے جارہے ہیں تاکہ ان تمام لوگوں کو پتہ چلایا جاسکے جو ایڈز وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں۔ مغربی میڈیا کے مطابق ریاست نیواڈا اور ریاست کیلیفورنیا میں واقع اکثرسٹوڈیوز میں میڈیکل ٹیسٹ اور احتیاطی تدابیر پر توجہ نہیں دی جارہی تھی جس کے نتیجے میں یہ واقع پیش آیا ہے۔

کامیابی کاراز انوشکا شرما نہیں ،ویرات کوہلی کے بیان نے سب کو حیران کر دیا

سال 2004ءمیں جب فحش اداکاروں میں ایڈز وائرس کی تصدیق ہوئی تو ماہانہ ٹیسٹ کا سلسلہ شروع کیا گیا اور جب گزشتہ سال ایک خاتون اداکارہ اس دردناک مرض کا شکار ہوئی تو ہر دو ہفتے بعد ٹیسٹ لازم قرار دے دیا گیا۔ میڈیا کے مطابق حالیہ واقعہ میں دونوں اداکار حفاظتی تدابیر کے بغیر ہی شیطانی حرکات کررہے تھے اور ان میں سے ایک نے دوسرے میں وائرس منتقل کیا۔

مزید :

تفریح -