الطافحسین حالی کا شمار جدو جہد آزادی کے اولین مشاہیر میں ہوتا ہے،رفیق تارڑ

الطافحسین حالی کا شمار جدو جہد آزادی کے اولین مشاہیر میں ہوتا ہے،رفیق تارڑ

  

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)شمس العلماء مولانا الطاف حسین حالیؒ کا شمار جدوجہد آزادی کے اوّلین مشاہیر میں ہوتا ہے، انہوں نے اپنی نظم ونثر سے اسلامیانِ ہند کو خوابِ غفلت سے بیدار کیاآج ملک سنگین بحران کا شکار ہے ،میں تمام قائدین سے گزارش کرتا ہوں کہ وہ اس نازک مرحلے پر اکٹھے ہو جائیں ہماری قوت اور مضبوطی باہمی اتحاد و اتفاق جبکہ ہماری کمزوری باہمی اختلافات میں ہے ان خیالات کااظہار تحریک پاکستان کے نامور کارکن، سابق صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان و چیئرمین نظریۂ پاکستان ٹرسٹ محمد رفیق تارڑ نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان میں شمس العلماء مولانا الطاف حسین حالیؒ کی 100ویں برسی کے موقع پرمنعقدہ ’’یوم حالی‘‘کی خصوصی نشست کے دوران اپنے صدارتی خطاب میں کیا۔ محمد رفیق تارڑ نے کہا کہ آج ملک سنگین بحران کا شکار ہے اور ہم آپس میں دست و گریبان اور لڑجھگڑ رہے ہیں۔چاروں اطراف دشمن اس طاق میں بیٹھے ہیں کہ کب یہ ایک دوسرے کے گلے کاٹنے شروع کریں اور ہمارے لیے غنیمت کا سامان بنے۔میں اللہ کے نام پر تمام قائدین سے انتہائی ادب سے گزارش کرتا ہوں کہ وہ اس نازک مرحلے پر اکٹھے ہو جائیں ، شاہد رشید کی تصنیف ’’شمس العلماء مولانا الطاف حسین حالیؒ ‘‘ایک قابل ستائش اقدام ہے اور میں اس پر انہیں مبارکباد پیش کرتا ہوں۔انہوں نے کہاآج ہمارے معاشرے میں لمبی لمبی تقریروں کا رواج ہے جو اکثر مقصدیت سے خالی ہوتی ہیں ،ہمیں ٹامک ٹوئیاں مارنے کی بجائے ٹودی پوائنٹ گفتگو کرنی چاہئے۔ مولانا الطاف حسین حالیؒ کے کلام میں بھی یہی پیغام ہے کہ ہم مصنوعی اورتخیلاتی باتیں کرنے کی بجائے عملی باتیں کریں۔سرسید احمد خان اور مرزا غالب کو پہچاننے اور ان کی پہچان کروانے میں مولانا الطاف حسین حالیؒ کا بڑا کردار ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -