مردہ جانورں کے گوشت سے زہریلا گھی بنانے والی فیکٹری پکڑی گئی

مردہ جانورں کے گوشت سے زہریلا گھی بنانے والی فیکٹری پکڑی گئی
مردہ جانورں کے گوشت سے زہریلا گھی بنانے والی فیکٹری پکڑی گئی

  

چنیوٹ (ویب ڈیسک) بھوآنہ میں مردار گوشت سے زہریلا گھی بنانے والی منی فیکٹری پکڑی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق ڈی ایس پی سرکل سعد اللہ خان کو عوامی شکایات ملی کہ ٹھٹھہ موسیٰ میں اکثر بدبو رہتی ہے جس کی وجہ سے زندگی گزارنا مشکل ہوچکی ہے اطلاع ملنے پر ایس ایچ او بھوآنہ کو ذمہ داری سونپی گئی جس کے بعد انہوں نے تین دن کی ریکی کے بعد آج ایک مکان پر چھاپہ مارا تو وہاں منوں کے حساب سے مردہ جانوروں کا گوشت اور چربی، آنتوں سے تیار کردہ گھی کنستروں میں بند پڑا تھا جس کو پولیس نے اپنے قبضہ میں لے لیا جب کہ حاجی خادم قصائی اور اس کے کارندے فرار ہوگئے۔

ذرائع کے مطابق یہ گوشت اے سی بسوں اور پرائیویٹ ڈالوں کے ذریعے اسلام آباد بھیجا جاتا ہے جہاں ہوٹلوں پر گھی کھانا بنانے اور گوشت پکانے کے کام آتا ہے۔ اہل علاقہ نے مطالبہ کیا کہ ملزمان کو سخت سے سخت سزا دی جائے ۔

مزید :

جرم و انصاف -