نیا سال حکومت اور عوام دونوں کیلئے مشکل ، ایک مرتبہ پھرفوج ملک کی باگ ڈور سنبھال سکتی ہے: ماہرعلم نجوم کی پیش گوئی

نیا سال حکومت اور عوام دونوں کیلئے مشکل ، ایک مرتبہ پھرفوج ملک کی باگ ڈور ...
نیا سال حکومت اور عوام دونوں کیلئے مشکل ، ایک مرتبہ پھرفوج ملک کی باگ ڈور سنبھال سکتی ہے: ماہرعلم نجوم کی پیش گوئی

  

لاہور(خصوصی خبرنگار) ماہر علم نجوم شیخ طارق اقبال نے کہاہے کہ 2015ءایک سخت آزمائشی سال، عوام کے لئے امتحان اور حکومت کے لئے سخت خطرہ لاسکتاہے ، افواج پاکستان کا کردارایک مرتبہ پھر ملکی سیاست میں سب سے اہم ہوگا اور ملک کی باگ ڈور بھی سنبھال سکتے ہیں ۔

روزنامہ پاکستان سے خصوصی گفتگوکرتے ہوئے شیخ طارق اقبال نے کہاکہ 2015ءکا منفرد عدد8بنتا ہے۔ علمِ نجوم کے حساب سے 8عدد کو حادثاتی عدد کہتے ہیں۔ اس لئے یہ بات بڑی جرات سے کہی جا رہی ہے کہ 2015ءایک آزمائشی اور حادثاتی سال ہوگا جس میں ہر چیز اچانک اور غیر متوقع ہونے کا امکان ہے اور پاکستان کو سب سے زیادہ خطرہ دہشت گردوں کی جانب سے رہے گا جو اچانک اور غیر متوقع مختلف اقسام کے واقعات کرکے عوام کے دلوں میں سخت خوف پیدا کرنے کی کوشش کرسکتے ہیں۔ یہاں پاکستان کے زائچے میں زحل اور مریخ کا ٹکراﺅ اس بات کی نشاندہی بھی کررہا ہے۔ وہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ ساتھ سیاست دانوں اور بے گناہ شہریوں کو بھی اپنا نشانہ بنا سکتے ہیں۔ ستاروں کی یہ پوزیشن 4جون تک برقرار رہے گی۔ اس لئے حکومت اور قانون نافذ کرنے والے تمام اداروں کو 4جون تک انتہائی سخت سیکیورٹی کی ضرورت رہے گی۔ پاکستان کے زائچے میں برج مشتری پر بھی زحل کی نحوست کے اثرات پڑ رہے ہیں۔ مشتری کا تعلق صاحب اقتدار لوگوں اور پاکستان کی اعلیٰ شخصیات سے ہے اس لئے پاکستان کی اعلیٰ شخصیات اور صاحب اقتدار لوگوں کو اپنی سیکیورٹی انتہائی سخت کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ جہاں 8 عدد پاکستان کے مشکلات دے رہا ہے وہاں پر یہ دشمنوں کے اوپر بھی بُری نظر رکھے ہوئے ہے اور آگے چل کر عقرب جب زحل میں داخل ہوگا۔ تو یہ دہشت گردوں کو اور مخالفین پاکستان کو بھی سخت نقصان پہنچائے گا۔ متعلقہ ستاروں کی نحوست کا اضافہ ان کی بے دردانہ موت کا بھی سبب بنے گا۔ پاکستان عوام کے لئے یہ خوشخبری ضرور ہے کہ آنے والے 6سے 7ماہ کے دوران 95فیصد دہشت گردوں کا صفایا ہو جائے گا۔ سال کی پہلی سہ ماہی میں دہشت گردوں کے ساتھ اندرون پاکستان میں بھی خانہ جنگی جیسی کیفیت رہے گی اور مارچ تک یہ صورت حال برقرار رہے گی۔ اس دوران اس بات کا اندیشہ بھی ہے کہ پاکستان کے بڑے شہر ان کے ارادوں کے نشانے پر ہوں گے۔اپریل تک ضرب عضب میں مسلح افواج پاکستان بڑی اہم کامیابی حاصل کرنے کے بعد اندرون ملک سے بھی بحکم خدا ان کا صفایا کرنے میں کامیاب ہوگی۔

پاکستان میں سال کے درمیان میں جا کر ایک مرتبہ پھر سیاست کا بازار گرم ہوگا۔ تحریک انصاف اور دیگر جماعتیں ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر ہوں گی اور حکومت گرانے کے لئے ایڑی چوٹی کا زور لگائیں گی۔ اس بات میں بھی کوئی شک نہیں کہ پاکستان کے موجودہ زائچے میں کئی سیاست دانوں پر لگائے گئے دھاندلی کے الزامات کے شوائد سامنے آ سکتے ہیں جس سے سیاسی ماحول کافی گرم ہوگا اور حکومت کی مخالف جماعتوں کو حکومت کے خلاف تحریک چلانے میں آسانیاں ملیں گی۔ میاں نوازشریف کا ستارہ ان دنوں شدید گردش میں ہوگا۔ اپوزیشن جماعتوں کا پریشر عوام کا ردعمل دیکھتے ہوئے پاکستانی افواج بھی اپنا کردار ادا کرنے کے بارے میں پوری طرح غور کرے گی۔ ستاروں کی جو پوزیشن اس وقت بن رہی ہے اس کو مدنظر رکھ کر اس بات کا بھی امکان ہو سکتا ہے کہ موجودہ حکومت اقتدار سے الگ ہو جائے۔ چونکہ مریخ ستارہ، برج اسد میں جو پاکستان کا ستارہ ہے میں پوری شدت سے اپنی کارستانیوں میں شدت لائے گا، کیونکہ مریخ کا تعلق پاکستانی مسلح افواج سے ہے تو اس بات کا شدید خطرہ رہے گا کہ پاکستانی فوج کے سربراہ کسی نہ کسی انداز سے حکومت کی باگ ڈور سنبھال سکتے ہیں اور یہ بھی امکان دکھائی دیتا ہے کہ ملک میں مارشل لاءجیسی صورت حال پیدا نہ ہو جائے، بہرحال دونوں صورتوں میں مسلح افواج کا بالواسطہ یا بلاواسطہ اقتدار کے قریب ہو سکتے ہیں۔

 اس صورت حال میں تمام جماعتوں کی حیثیت صفر ہو سکتی ہے اور اگلے دو تین سال مسلح افواج کا اقتدار چل سکنے کے امکانات ہیں۔ مہنگائی، لوڈشیڈنگ کا جن حکومت کے ہاتھوں سے بے قابو ہو گا۔ حکومت وقت اپنے وعدے پورے کرنے میں ناکام ہو سکتی ہے اور ملک میں ایجی ٹیشن کی سیاست ،دہشت گردی جیسے واقعات عوام کو مجبور کر سکتے ہیں کہ وہ ایک مرتبہ پھر پاکستانی افواج کی طرف دیکھیں۔

فی الحال تحریک انصاف کو اقتدار حاصل کرنے کے لئے انتظار کرنا پڑے گا۔2015ءمیں ماسوائے ایجی ٹیشن کی سیاست کے اس کے ہاتھ کچھ نہ آئے گا۔

طاہر القادری کی صحت کا خانہ ابھی زیادہ مناسب دکھائی نہیں دیتا۔وہ چاہ کر بھی سیاست میں کوئی خاص کردار نہیں کر سکتے۔ جوڑ تور اور بیان بازی کی سیاست چلتی رہے گی۔ ق لیگ مختلف جماعتوں کے گروپ بناکر ایک بڑی پارٹی بنانے میں کامیاب ہو سکتی ہے۔ دوسری جماعتوں سے مایوس سیاست دان بھی اس کا رخ کر سکتے ہیں۔

بھارت کے ساتھ سال میں کئی مرتبہ سرحدی کشیدگی ہوتی رہے گی اور بھارت پاکستان کے خلاف سازشیں جاری رکھے گا، لیکن بحکم خدا وہ پاکستان کا کجھ بھی نہیں بگاڑ سکتا۔ مجموعی طور پر 2015ءایک آزمائشی سال ہے لیکن ہم اپنے اعمال کو درست کرکے اللہ کے حضور سچی توبہ کے ساتھ رجوع الٰہی کریں تو انشاءاللہ یہ آزمائش کے دن ضرورنکل جائیں گے اور آنے والے دن خوشیوں بھرے ہوں گے، کیونکہ پاکستان کا پیدائشی زائچہ اس بات کی نشاندہی کررہا ہے کہ اللہ کے نام پر لیا ہوا یہ ملک سدا اللہ تعالیٰ کے حفظ و امان میں رہے گا۔ کوئی چاہ گر بھی اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا۔ تاریخ گواہ ہے کہ جنہوں نے بھی اس ملک کے ساتھ بددیانتی کی وہ بُرے انجام سے دوچار ہوئے۔(واللہ اعلم الغیب)

مزید :

قومی -