ائیر ایشیا حادثہ پائلٹ کا بیٹا آج بھی لوگوں کو بتاتا ہے کہ ابو کام پر گئے ہیں

ائیر ایشیا حادثہ پائلٹ کا بیٹا آج بھی لوگوں کو بتاتا ہے کہ ابو کام پر گئے ہیں
ائیر ایشیا حادثہ پائلٹ کا بیٹا آج بھی لوگوں کو بتاتا ہے کہ ابو کام پر گئے ہیں

  

جکارتہ (نیوز ڈیسک) ائیرایشیاءکی پرواز QZ8501 کے المناک حادثے میں 162 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں اور ساری دنیا اس اندوہناک حادثے پر غمزدہ ہے لیکن اس طیارے کے پائلٹ کا ننھا بیٹا ابھی تک یہی سمجھ رہا ہے کہ اس کے والد اپنے پیشہ ورانہ فرائض سرانجام دے رہے ہیں اور جلد گھر واپس آجائیں گے۔

نئے سال کا آغاز،رنگ رلیاں مناتے 35 چینی جان سے گئے جاننے کیلئے کلک کریں

 ننھے آریا گلیح کی عمر 8 سال ہے اور اسے تاحال یہ نہیں بتایا گیا کہ اس کے والد کا طیارہ حادثے کا شکار ہوگیا ہے اور وہ اب اس دنیا میں نہیں ہیں۔ آریا کے چچا نے بتایا کہ وہ اپنے والد سے شدید محبت کرتا ہے اور ہر وقت پوچھتا رہتا ہے کہ وہ کب گھر واپس آئیں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ سارے گھر والے پریشان ہیں کہ بچے کو یہ دلخراش خبر کیسے دی جائے۔ گھر میں سارے ٹی وی بھی بند رکھے گئے ہیں تاکہ ننھے بچے کو حادثے کی خبر نہ ہو۔ بدقسمت پرواز کے پائلٹ کیپٹن ایریا نتھو ایک انتہائی تجربہ کار پائلٹ سمجھے جاتے تھے۔ وہ ائیر ایشیاءمیں شمولیت سے پہلے ائیرفورس میں پائلٹ رہ چکے ہیں اور ہوا بازی کا وسیع تجربہ رکھتے تھے۔

مزید :

بین الاقوامی -