معذور افراد کی مالی معانت :خدمت کارڈ کا اجراء

معذور افراد کی مالی معانت :خدمت کارڈ کا اجراء
معذور افراد کی مالی معانت :خدمت کارڈ کا اجراء

  

ریاستی وسائل پر سب سے زیادہ حق عوام کا ہوتا ہے۔ حکومت ان وسائل کو بطور امانت اپنے پاس رکھتی ہے اور انہیں شہریوں کی فلاح وبہبود پر صرف کرنے کی کوشش کرتی ہے۔جمہوری طرز حکومت میں ریاست کی یہ ذمہ داری نسبتاً زیاد ہ حساس نوعیت کی ہوتی ہے، کیونکہ منتخب حکومت نہ صرف عوام کو جوابدہ ہوتی ہے ،بلکہ اسے اپوزیشن کی شکل میں ایک مستقبل مانیٹرنگ کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے۔جمہوریت کا سب سے اہم پہلو یہی ہے کہ تمام شہری برابر ہوتے ہیں اور عوام کی خدمت حکومت کا سب سے بڑا مقصد ہوتاہے۔ اس تناظر میں صوبہ پنجاب کے عوام خوش قسمت ہیں کہ انہیں وزیراعلیٰ شہباز شریف جیسا عوام دوست اور متحرک رہنما ملا ہے۔اگر وزیراعلیٰ کے ویژن کو ایک لفظ میں بیان کیاجائے تو وہ ہے ’’خدمت خلق‘‘گزشتہ اورموجودہ دور حکومت گواہ ہیں کہ انہوں نے ایک ایک دن صوبے کی ترقی اور عوام کی خدمت کے لئے اقدامات کرنے میں گزارا۔اشرافیہ کی بجائے عام آدمی کی بہتری کو مقدم سمجھا۔ تعلیم، صحت، مواصلات اور امن وامان کے شعبے ہوں یا گھروں سے محروم افراد کو مکانات کی فراہمی کا معاملہ یا خود روزگار سکیم۔۔۔ ہر شعبے میں ایک منظم طریقے کے تحت ترقیاتی منصوبے مکمل کئے گئے۔ترقیاتی منصوبوں میں لوٹ مار کا باب بند کرکے شفافیت اور گڈ گورننس کے کلچر کو فروغ دیا گیا۔

وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی ولولہ انگیز قیادت میں حکومت پنجاب نے معذور اور خصوصی افراد کے لئے ’’خدمت کارڈ‘‘ کے نام سے ایک فلاحی پروگرام کا آغاز کیا ہے، جس کا بنیادی مقصد ان افراد کی نہ صرف مالی معاونت کرنا ہے، بلکہ ان کو فنی مہارت فراہم کرکے انہیں ایک باعزت روزگار کی فراہمی یقینی بنانا ہے تاکہ وہ دوسرے پر بوجھ بننے کی بجائے اپنے پاؤں پر کھڑے ہوں سکیں اور ملکی ترقی وخوشحالی میں اپنا بھرپور کردار ادا کر سکیں۔یہ پروگرام پاکستان کی تاریخ میں اپنی نوعیت کا پہلا پروگرام ہے، جس کا آغاز کیا گیا ہے، جس کا ہدف صوبے بھر کے انتہائی کم آمدنی والے معذور افراد ہیں۔ پہلے مرحلے میں اس پروگرام سے 2لاکھ خصوصی افراد مستفید ہوں گے، جن کے لئے 2 ارب روپے کی خطیر رقم مختص کی گئی ہے۔ ان افراد کو ماہانہ1200 روپے کی مالی معاونت، یعنی سہ ماہی بنیادوں پر 3600 روپے فراہم کئے جارہے ہیں۔ یہ پروگرام پورے پنجاب میں بیک وقت شروع کیا گیا ہے اور معذور افراد کو سم جاری کرنے کی تقاریب ڈویژنل اور ضلعی سطح پر ایک ہی وقت میں منعقد ہوئیں۔صوبائی دارالحکومت میں مرکزی تقریب منعقد ہوئی، جس میں وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف مہمان خصوصی تھے۔ اس تقریب میں صوبائی وزراء، مشیران، ممبران قومی وصوبائی اسمبلی کے علاوہ معذور افراد اور ان کے خاندان کے افراد نے خصوصی طور پرشرکت کی۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے کمپیوٹر کا بٹن دبا کر اس پروگرام کا افتتاح کیا اور معذور افراد کو ان کی سیٹ پر جا کر سم کارڈ دیا۔معذور افراد کا چناؤ مکمل طور پر صاف شفاف اور میرٹ پر کیا گیا ہے۔

ضلعی سطح پر قائم مراکز میں معذور افراد کو لایا گیا اور ان کا طبی معائنہ کرانے کے علاوہ ان کے انگوٹھوں کی نشاندہی کی گئی ہے، جس کے بعد انہیں موبائل سم اورخدمت کارڈ(اے ٹی ایم کارڈ) جاری کیا گیا ہے۔ سم کے ذریعے اکاونٹ ہولڈر کو میسج کیا جائے گا کہ رقم اس کے اکاونٹ میں منتقل ہو گئی ہے اور وہ اسے نکلوا سکتا ہے۔ پنجاب کے انتہائی غریب گھرانوں سے تعلق رکھنے والے معذور افراد کی شناخت اور ان تک رسائی کے لئے بے نظیر بھٹو انکم سکیم سپورٹ پروگرام کے اعداد وشمار سے مدد لی گئی ہے۔ پنجاب حکومت نے مستحق خصوصی افراد کی مالی معاونت، بحالی و فلاح، مفت فنی تربیت اور بلاسود قرضوں کی فراہمی کے لئے پاکستان کی تاریخ میں اپنی نوعیت کے پہلے اور منفرد پروگرام ’’پنجاب خدمت کارڈ ‘‘ کا اجراء کر دیا ہے۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے لیپ ٹاپ کا بٹن دبا کر ’’پنجاب خدمت کارڈ پروگرام‘‘ کا باقاعدہ اجراء کیا اور خصوصی افراد کی نشستوں پر جا کر ان میں خدمت کارڈ تقسیم کئے۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صوبے بھر میں خصوصی افراد کو معاشرے کا فعال اور مفیدرکن بنانے کے لئے ’’پنجاب خدمت کارڈ پروگرام‘‘ کا آغاز کر دیا گیا ہے اور یہ پروگرام پورے پنجاب میں شروع کیا گیا ہے اور رقوم کی ادائیگی کے لئے ایسا باوقار طریقہ کار اختیار کیا گیا ہے، جس سے ان کی عزت نفس مجروح نہ ہو۔

مستحق خصوصی افراد بینک آف پنجاب کی شاخوں یا اے ٹی ایم مشینوں سے رقوم حاصل کر سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ خصوصی افراد بھی عام شہریوں کی طرح عظیم پاکستانی ہیں اور ان کے دِل میں بھی وطن کی تڑپ اور معاشرے پر بوجھ بننے کی بجائے اس کا بوجھ بانٹنے کا جذبہ اور لگن موجود ہے۔ خصوصی افراد معاشرے کا اہم حصہ ہیں اور ان کی معاونت کرنا معاشرے اور ریاست کا فرض ہے اور اسی عظیم مقصد کو پیش نظر رکھ کر پنجاب بھر میں خدمت کارڈ پروگرام کا آغاز کیا گیا ہے، جو وطن عزیز اور معاشرے کے لئے کچھ کرنے کے حوالے سے دل میں گہری تڑپ رکھتے ہیں۔ خصوصی افراد کو اگر تکنیکی، فنی اور ووکیشنل تربیت سے آراستہ کیا جائے تو وہ معاشرے کے لئے کارآمد اور مفید ثابت ہو سکتے ہیں اور معاشرے کے دُکھ درد بانٹنے میں اپنا حصہ ڈال سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب خدمت کارڈ پروگرام کے ذریعے ہم خدانخواستہ ہاتھ پھیلانے والوں کی فوج ظفر موج تیار نہیں کر رہے ،بلکہ اس پروگرام کے ذریعے خصوصی افراد کی مالی معاونت اور فنی تربیت کے ذریعے انہیں اپنے پاؤں پر کھڑا کریں گے تاکہ وہ اپنے لئے روزگار کما سکیں، جس سے ان کی عزت و توقیر میں بھی اضافہ ہو گا اور وہ عملی طور پر معاشرے کی تعمیر و ترقی میں اپنا حصہ ڈالیں گے۔’’پنجاب خدمت کارڈ‘‘ کے ذریعے خصوصی افراد کا پورا خیال رکھا جائے گا اور انہیں اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کے لئے ہرممکن تعاون اور اقدامات کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس پروگرام کا آغاز آج پنجاب کے 9 ڈویژنوں اور 36 اضلاع میں بیک وقت کر دیا گیا ہے اور اس پروگرام کے ذریعے نہایت شفاف طریقے سے خصوصی افراد کی مالی معاونت کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ مستحق خصوصی افراد کو خدمت کارڈ کے ذریعے مالی امداد کی ادائیگی کے لئے اضلاع کی سطح پر کمیٹیاں تشکیل دے دی گئی ہیں اور یہ تمام عمل انتہائی شفاف انداز میں ہو گا، جس کی مکمل مانیٹرنگ کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس بڑے پروگرام کے ذریعے دُکھی انسانیت کے سر پر دست شفقت رکھا گیا ہے اور یہ بہت عظیم مقصد ہے جس کی تلقین قرآن مجید نے بھی کی ہے اور نبی کریمﷺ کی تعلیمات بھی یہی ہیں۔

پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کا ذکرکرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ مستحق، ذہین اور ہونہار طلبہ و طالبات کو زیور تعلیم سے آراستہ کرنے کے لئے پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ حکومت پنجاب کا ایک انقلابی پروگرام ہے، اس فنڈ کا مجموعی حجم 15 ارب روپے تک پہنچ چکا ہے، جس کی آمدن سے ہزاروں طلبہ و طالبات اعلیٰ تعلیم حاصل کر رہے ہیں ۔ تعلیمی فنڈ سے مستفید ہونے والے مستحق طلبہ و طالبات کی تعداد ایک لاکھ تک پہنچ چکی ہے۔ تعلیمی فنڈ کے روح رواں ڈاکٹر امجد ثاقب نے وعدہ کیا ہے کہ وہ اگلے ایک برس کے دوران مستحق طلبہ و طالبات کی تعداد ایک لاکھ سے بڑھا کر 2لاکھ تک لے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس تعلیمی فنڈ کی خوبی یہ بھی ہے کہ اس سے نہ صرف پنجاب، بلکہ پاکستان کی تمام اکائیوں کے مستحق بچے اور بچیاں تعلیم حاصل کر رہی ہیں۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے ذریعے غریب گھرانوں کے ہونہار طلبہ و طالبات ملکی و غیرملکی تعلیمی اداروں میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں اور وہ ڈاکٹر، انجینئر، اساتذہ ، بینکر بن رہے ہیں۔

خود روز گار سکیم کے تحت مستحق افراد کو بلاسود قرضوں کی فراہمی کے پروگرام کا ذکر کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ حکومت پنجاب کے اس انقلابی پروگرام سے صوبے کے لاکھوں لوگ مستفید ہو رہے ہیں۔ اب تک 8 لاکھ گھرانوں میں 16 ارب روپے کے بلا سود قرضے تقسیم کئے جا چکے ہیں ،جن کی وصولی 99.9 فیصد ہے۔ یہ ایسے پروگرام ہیں جو اس عزم، قوت، جذبے اور سوچ کی عکاسی کرتے ہیں کہ اگر ہم کچھ کرنا چاہیں تو پہاڑ جیسی رکاوٹیں بھی منزل کے حصول میں حائل نہیں ہو سکتیں۔ مسلسل محنت اور جدوجہد سے اپنے مقاصد حاصل کئے جا سکتے ہیں۔ صوبائی وزیر خزانہ ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پنجاب خدمت کارڈ پروگرام کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی تاریخ میں پہلی بار خصوصی افراد کو ٹارگٹ کرکے انہیں ہر طرح کی سہولتیں فراہم کرنے کے شاندار پروگرام کا آغاز کیا گیا ہے۔ اس پروگرام کے تحت خصوصی افراد کو معاشرے کا باوقار، خودمختار اور اہم رکن بنانے میں مدد ملے گی۔ پروگرام کے تحت خصوصی افراد کو فنی تربیت دی جائے گی اور بلاسود قرضے فراہم کئے جائیں گے۔

مشیرصحت خواجہ سلمان رفیق نے کہا کہ آج تاریخ ساز دن ہے، جب وزیراعلیٰ شہبازشریف کی قیادت میں معاشرے کے اہم ترین افراد کی نگہداشت اور مالی معاونت کے شاندار پروگرام کا آغاز کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رجب طیب اردگان ہسپتال مظفرگڑھ میں معذور افراد کی بحالی کا مرکز بن چکا ہے، جبکہ محمد شہباز شریف ہسپتال، بیدیاں روڈ لاہور میں بھی مرکز برائے بحالی جسمانی معذوراں قائم ہو چکا ہے۔ پنجاب حکومت اس طرح کے مراکز دیگر شہروں میں بھی بنائے گی۔ صوبائی وزیر زکوٰۃ و عشر ملک ندیم کامران نے کہا کہ پنجاب کے وزیراعلیٰ شہبازشریف مبارکباد کے مستحق ہیں جنہوں نے خصوصی افراد کی معاونت کے لیے عظیم پروگرام کا اجراء کیا ہے۔ چیئرپرسن بے نظیربھٹو کی انکم سپورٹ پروگرام ماروی میمن نے کہا کہ پنجاب میں خصوصی افراد کے لئے خدمت کارڈ پروگرام کا اجراء خوش آئند ہے اور ہمارا س پروگرام کے لئے تعاون جاری رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ شہباز شریف کی قیادت میں پنجاب حکومت نے خصوصی افراد کو سہولتوں کی فراہمی کے لئے جو تاریخی قدم اٹھایا ہے ،دوسرے صوبوں کو بھی ایسے اقدامات کرنے چاہئیں تاکہ ان صوبوں کے خصوصی افراد بھی سہولتوں سے فائدہ اٹھائیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے غریب اور مستحق افراد کے لئے کئی فلاحی پروگرام شروع کئے ہیں جن کے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔انہوں نے معذور افراد کی بحالی کے لئے خدمت کارڈ کا اجراء کرکے دوسرے صوبوں سے سبقت لے لی ہے۔

مزید :

کالم -