مخدوش تاریخی کی بحالی ، شاہی باورچی خانہ ، جہانگیر ی احاطہ سمیت سیاحتی مراکز کی تعمیر نو

مخدوش تاریخی کی بحالی ، شاہی باورچی خانہ ، جہانگیر ی احاطہ سمیت سیاحتی مراکز ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر)والڈ سٹی آف لاہور اتھارٹی نے سال 2018 کی کارکردگی رپورٹ جاری کردی جس کے مطابق مخدوش تاریخی یادگاروں کی بحالی کے بیشتر منصوبوں کو مکمل کرنے کے ساتھ متعدد سیاحتی سرگرمیوں کا آغاز بھی سال 2018 میں کیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق جہاں شاہی قلعہ میں موجود بارود خانہ، شاہی باورچی خانہ ، جہانگیری احاطہ ، دیوان عام سمیت شاہی غسل خانہ کی بحالی کا کام مکمل کیا گیا وہیں بھاٹی گیٹ سے ٹبی سٹی پولیس سٹیشن تک جانے والی گزرگاہ کا دستاویزی کام بھی مکمل کر لیا گیا ہے جبکہ مذکورہ گزرگاہ کی مرمت اور بحالی کاکام رواں سال 2019میں بجٹ ملنے کے بعد شروع کر دیا جائے گا۔ اسی طرح چوک وزیر خان میں قائم قدیم تاریخی ورثہ کی بحالی کا کام سال 2018میں شروع کیا گیا جبکہ کوتوالی چوک ، ڈبی بازار اور سنہری مسجد کے ارد گرد کی عمارات اور گلیوں کی مرمت اور بحالی کا منصوبہ 2018میں بنایا گیا جس پر 2019میں جس پر کام شروع کر دیا جائے گا ۔رپورٹ کے مطابق اندرون لاہور میں قائم مغلیہ عہد کی ایک تاریخی یادگار مریم زمانی مسجد کی ڈاکومینٹیشن کا کام بھی مکمل کر لیا گیا ہے۔پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ بادشاہی مسجد، شاہی قلعہ، سمادھی مہاراجہ رنجیت سنگھ، روشنائی دروازہ ، عالمگیری دروازہ ، مثمن دروازہ ، لوح کا مندر، شاہی گزرگاہ ، پکچر وال، ثمر پیلس اور شیش محل سمیت حضوری باغ جیسے تاریخی ورثہ کی خوبصورتی میں اضافہ کرنے کے لئے اسے برقی روشنیوں سے سجایا گیا اور یہاں سیاحت کے فروغ کے لئے نائٹ ٹورازم کا آغاز کیا گیا ۔

جس میں گزشتہ سال 4700کے قریب سیاح شرکت کر چکے ہیں۔ اسی طرح گزشتہ سال تقریبا 75000سیاح شاہی گزرگاہ اور دہلی دروازے کی سیر کو آئے جبکہ,00 45,000 کے قریب سیاح شاہی قلعہ کی سیاحت سے لطف اندوز ہوئے۔ثقافتی فروغ کے لئے داستان گوئی اور داستان شہر لاہور جیسی تقریبات منعقد کی گئیں جبکہ امن و آتشی اور بھائی چارے کے فروغ کے لئے شاہی باورچی خانہ میں صوفی ازم سے متعلق تقریبات کا آغازبھی کیا گیا جن میں بلھے شاہ کی زندگی اور ان کے پیغامات پر روشنی ڈالنے کے حوالے سے’’ بلھا‘‘ کے نام سے ایک صوفی نائٹ کا اہتمام بھی کیا گیا۔ طلبا و طالبات کو مخدوش عمارتوں کی بحالی میں استعمال ہونے والی فنی تکنیکوں سے روشناس کروانے کے لئے سال 2018میں میٹ دی ایکسپرٹ سیشن کا آغاز کیا گیا جس میں 700سے زائد طلبا و طالبات نے شرکت کی جبکہ کشتی جیسے ثقافتی کھیل کے فروغ کے لئے کشتی ٹورز اور دنگل بھی کروائے گئے۔اندرون لاہور میں قائم غیر قانونی پلازوں کے خلاف والڈ سٹی اتھارٹی کے بلڈنگ کنٹرول ڈیپارٹمنٹ کی جانب سے 25 غیر قانونی پلازوں کے خلاف آپریشن کیا گیا جن میں متعدد کو مسمار اور سیل کر دیا گیا جبکہ ناجائز تجاوزات کے خلاف 9بڑے آپریشن کئے گئے ۔ اسی طرح شاہ عالم مارکیٹ میں اتھارٹی کی جانب سے گرینڈ آپریشن کیا گیا جس کے نتیجے میں اربوں روپے مالیت کی قیمتی اراضی واگزار کرائی گئی جبکہ مشن کلین لاہور میں بھی والڈ سٹی اتھارٹی کا کردار نمایاں رہا۔گزشتہ سال والڈ سٹی لاہور اتھارٹی کے سوشل موبلائزیشن ونگ نے صفائی مہموں کا آغاز بھی کیا جس میں اندرون لاہور کے سکولوں کے طلبا کے ساتھ مل کر ’’ہوگا صاف پاکستان ‘‘ کے نام سے ایک بڑی مہم بھی چلائی گئی۔ سوشل موبلائزیشن ونگ نے رم مارکیٹ کی 320 دوکانوں کا سروے مکمل کیا اور خواجہ سراؤں کے تحفظ کے لئے انکی کمیونٹی آرگنائزیشن بنائی اور ان کے لئے ایچ آئی وی ایڈز کی تشخیص کے لئے مفت کیمپ بھی لگائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -