پلی بارگین کا قانون ختم نہیں کیا جانا چاہئے :مجیب الرحمان شامی

پلی بارگین کا قانون ختم نہیں کیا جانا چاہئے :مجیب الرحمان شامی
پلی بارگین کا قانون ختم نہیں کیا جانا چاہئے :مجیب الرحمان شامی

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)معروف دانشور مجیب الرحمان شامی نے کہاہے کہ نیب کا پلی بارگین کا قانون ختم نہیں ہونا چاہئے ، اگر پلی بارگین ختم ہوجائے تو پھر پیسہ وصول نہیں ہوسکے گا ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”نقطہ نظر “ میں گفتگو کرتے ہوئے مجیب الرحمان شامی نے کہا کہ اگر پلی بارگین ختم ہوجائے تو پھر پیسہ وصول نہیں ہوسکے گا ، لوگ کہیں گے کہ ٹھیک ہے کہ ہم قید کاٹ لیں گے ، پیسہ تو بچ جائے گا ، پلی بارگین کا قانون رہنا چاہئے کیونکہ دنیا میں یہ قانون موجود ہے ۔

انہوں نے کہا کہ نیب کے ملزم کو بند کرکے کوئی مسئلہ حل نہیں ہوگا ، ہر انتظامی غلطی کو کرپشن نہیں بنایا جاسکتا ، دنیا میں کہیں ایسا نہیں ہوتا کہ ملزم کو پکڑ کر تفتیش کی جاتی ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ وائٹ کالر ہو یا بلیک کالر کرائم ہو لوگوں کو پکڑ کر ان سے اعتراف کروانا یہ کوئی تفتیش کاطریقہ نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نیب قوانین میں بہتری لائی جانی چاہئے ، جس آدمی کوجب چاہا پکڑا لیاجائے، اس کی کھلی چھٹی نہیں ہونی چاہئے ، اس وقت دفتروں میں کام بند ہوئے ہیں اور سرکاری افسران خوفزدہ ہیں ، اس لئے نیب کے اس قانون پر قدغن ضرورہونی چاہئے ۔

مزید :

قومی -