بدقسمتی سے قومی ایئر لائن بد انتظامی اورکرپشن کی نذ ر ہوئی :وزیر اعظم

بدقسمتی سے قومی ایئر لائن بد انتظامی اورکرپشن کی نذ ر ہوئی :وزیر اعظم
بدقسمتی سے قومی ایئر لائن بد انتظامی اورکرپشن کی نذ ر ہوئی :وزیر اعظم

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیرِاعظم عمران خان نے کہاہے کہ بد قسمتی سے قومی ایئر لائن کا شمار ان اداروں میں ہوتا ہے جو بد انتظامی اور کرپشن کی نذر ہوئے ہیں،وزیر اعظم نے موجودہ انتظامیہ کی جانب سے پی آئی اے کی ترقی کیلئے کوششوں پر اطمینان کا اظہار کیا ۔

جیونیوز کے مطابق وزیرِاعظم عمران خان کی زیرصدارت پی آئی اے کی اصلاحات سے متعلق اعلیٰ سطح اجلاس ہوا جس میں وزیرِ خزانہ اسد عمر، وزیرِ ہوا بازی محمد سومرو، ایئر چیف مارشل مجاہد انور خان، چیئرمین پی آئی اے ایئر مارشل اسد محمود ملک شریک ہوئے ،اس موقع پر وزیراعظم کو پی آئی اے کے انتظامی، مالی و دیگر معاملات پر تفصیلی بریفنگ دی گئی جب کہ ادارے کی بہتری، منظم اور پروفیشنل طریقے سے چلانے کے امور پر چیئرمین پی آئی اے نے بریفنگ دی۔ انہیں بدعنوانی کے خاتمے، مالیاتی خسارے میں کمی لانے اور سروس کی بہتری کیلئے اقدامات پر بھی بریفنگ دی گئی، وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ ادارے کا کل خسارہ 414.3 ارب روپے ہے، خسارے میں 247 ارب روپے قرضوں کی مد میں اور 144.7 ارب روپے واجبات شامل ہیں۔

وزیر اعظم کو بتایا گیاکہ صرف 7 بین الاقوامی روٹس پر پی آئی اے کو 500 ملین کے خسارے کا سامنا ہے جب کہ اندرون ملک غیرمنافع بخش روٹس پر ہونے والا خسارہ اس سے الگ ہے، نقصانات کے پیش نظر بین الاقوامی روٹس کا ازسرنو جائزہ لیا جا رہا ہے، طیاروں کی حالتِ زار اور متعلقہ زمینی سہولتوں پر عدم توجہ کے باعث بنیادی سہولتوں کی کمی تھا۔

اس موقع پر وزیرِاعظم عمران خان نے ادارے کی ترقی کیلئے موجودہ انتظامیہ کی کوششوں پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے چیئرمین پی آئی اےکو مربوط اور جامع بزنس پلان کو جلد از جلد حتمی شکل دینے کی ہدایت کی۔انہوں نے کہا کہ قومی ایئرلائن ہونے کے ناطے پی آئی اے ملک کی پہچان ہے لیکن بدقسمتی سے قومی ایئر لائن کا شمار بھی ان اداروں میں ہوتا ہے جو بدانتظامی اور کرپشن کی نذر ہوئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ان اداروں کا بوجھ عام آدمی اور ٹیکس دہندگان کو مسلسل برداشت کرنا پڑ رہا ہے تاہم پی آئی اے کی بحالی اور منافع بخش ادارہ بنانے کیلئے حکومت کی جانب سے ہر ممکن مدد کی جائیگی۔

مزید :

قومی -