جنوبی پنجاب:شوگر ملز بند کرنے پرغور، کاشتکار وں میں تشویش کی لہر

جنوبی پنجاب:شوگر ملز بند کرنے پرغور، کاشتکار وں میں تشویش کی لہر

  



نور پورنورنگا (نمائندہ پاکستان) سنٹرل پنجاب کے بعد اب یہا ں جنوبی پنجاب میں خصوصا بہاولپور اور رحیم یار خان کی شوگر ملو ں نے بھی غیر معینہ مدت کے لیے ملیں بند کرنے پر سوچ و چار شروع کر دیا ہے۔تفصیلا ت کے مطا بق پنجاب بھر میں شو گر ملوں نے اب گنا کی خریداری سے انکار کر دیا ہے اور ملوں کو غیر معینہ مدت کے لیے بند کرنے کے بعد اعلان کردیا ہے کہ جب تک گنا سرکاری نرخ 190روپے فی من کے مطابق گنا سپلائی نہیں ہو گا تب تک شوگر ملوں کی بندش جاری رہے گی ترجما ن پنجاب شوگر ملز (بقیہ نمبر35صفحہ12پر)

ایسوسی ایشن نعمان اے خا ن کے مطابق کسانو ں کا سرکاری نرخ 190روپے فی من گنا فروخت سے انکاری ہیں جس کی وجہ سے اب گنے کی قیمت 230روپے من تک پہنچ چکی ہے جس کے باعث مو جودہ حالات میں شوگر ملوں کے لیے اب مزید گنے کے موجودہ نرخوں پرملیں چلانا بہت مشکل ہو گیا ہے اسی طرح کسان حلقو ں کے مطابق مظفرگڑھ،لیہ، جھنگ،چنیوٹ میں پیر کی صبح کو شوگر ملوں کے دروازے تو کھول دیے گئے مگر گنا خرید نہیں کر رہیں اور یہی صورتحال اب جنوبی پنجاب کے اضلاع بہاولپور اور رحیم یار خان میں بھی بننے جا رہی ہے پنجاب میں ملوں کی بند ش کے بعد اب تک پنجاب حکومت اس ساری صورتحال پر خا موش تماشائی بنی ہوئی ہے اور گنے کی خریداری اور شوگر ملوں کو کھولنے کے لیے کوئی عملی اقدامات نہیں کر رہی جس سے اس بحران کا مزید شدت اختیار کر نے کا خدشہ اوربڑھ گیا ہے۔  

مزید : ملتان صفحہ آخر