2019ء مہنگائی کا سال، اشیاء کی قیمتوں میں 236فیصد اضافہ ہوا

2019ء مہنگائی کا سال، اشیاء کی قیمتوں میں 236فیصد اضافہ ہوا

  



کراچی(این این آئی)عوام کے لیے سال 2019 مہنگائی کا سال رہا،ہفت روزہ بنیاد پر قیمتوں میں اضافے کی شرح میں 236 فیصد اضافہ ہو گیا، ایک سال میں مہنگائی کی شرح ساڑھے 5 فیصد سے ساڑھے 18 فیصد تک پہنچ گئی۔وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق دسمبر کے تیسرے ہفتے کے(بقیہ نمبر44صفحہ12پر)

 دوران کھانے پینے کی 21 بنیادی اشیاء کی قیمتوں میں 17 فیصد تک اضافہ ریکارڈ کیا گیا، جس کے باعث ہفت روزہ بنیاد پر مہنگائی میں اضافے کی اوسط شرح 18.5 فیصد تک پہنچ گئی، گزشتہ سال دسمبر کے چوتھے ہفتے میں یہ شرح 5.5 فیصد تھی، ہفتے کے دوران مارکیٹ میں آٹے، چاول،گھی، کوکنگ آئل، چینی، تمام دالوں، چکن، انڈوں اور بریڈ کی قیمت میں اضافہ دیکھا گیا، ایل پی جی، جلانے کی لکڑی، صابن اور کپڑے کی قیمت بھی مزید بڑھ گئی۔ رپورٹ کے مطابق مارکیٹ میں کھانے پینے اور روز مرہ استعمال کی 51 بنیادی اشیاء میں سے 47 اشیاء گزشتہ سال دسمبر کے مقابلے میں 174 فیصد تک مہنگی ہو چکی ہیں، ہفتے کے دوران مارکیٹ میں ٹماٹر گزشتہ سال کے مقابلے میں 174 فیصد، پیاز 151 فیصد اور لہسن 118 فیصد مہنگا فروخت ہوا، آلو کی قیمت 88 فیصد، دال مونگ کی قیمت 66 فیصد، دال ماش کی 40 فیصد اور چینی کی قیمت ایک سال میں 28 فیصد زیادہ ہو گئی۔

مہنگائی

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...