کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ 5انجیو گرافی 9ایکو کارڈیوگرافی مشین فعال،1501 سے زائد آپریشن انتظامیہ ہسپتال کے مسائل حل کرنے کیلئے سرگرم

  کارڈیالوجی انسٹی ٹیوٹ 5انجیو گرافی 9ایکو کارڈیوگرافی مشین فعال،1501 سے زائد ...

  



ملتان (وقا ئع نگار) سال 2019 کے دوران یکم جنوری سے 31 دسمبر تک 14 ہزار سے زائد انجیو گرافی،انجیوپلاسٹی بائی پاس سمیت دیگر سرجری کی گئیں،پانچ انجیو گرافی اور 9 ایکوکارڈیوگرافی مشینیں فعال کی گئیں،208 بستروں (بقیہ نمبر25صفحہ12پر)

پر مریضوں کے بے پناہ رش کے باوجود کارڈیالوجی انتظامیہ نے بہترین علاج کی سہولیات فراہم کر کے کارکردگی میں سب سے آگے رہے 208 بستروں پر مشتمل جنوبی پنجاب اندرون سندھ بلوچستان اور کے پی کے مریضوں کو علاج کی سہولیات فراہم کرنے والے کارڈیالوجی انسٹیٹیوٹ میں سال 2019 کے دوران 7ہزار 880 مریضوں کی انجیوگرافی کی گئی جبکہ 3 ہزار 284 مریضوں کی انجیوپلاسٹی کی گئی جبکہ بائی پاس کے 1501 آپریشن کئے گئے اسی طرح جنرل سرجری کے بھی 1501 آپریشن کئے گئے،چوہدری پرویز الہی انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے ایگزیگٹو ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر رانا الطاف نے بتایا کہ 2019 کے دوران فرینڈز آف کارڈیالوجی کی مدد اور حکومت پنجاب کی دلچسپی کے باعث ایک انجیوگرافی مشین انسٹال کر کے فعال کی گئی اس طرح پانچ انجیوگرافی مشینوں کے ذریعے مریضوں کو سہولیات فراہم کی گئیں جبکہ 09 ایکوکارڈیوگرافی مشینوں کو فعال رکھا گیا تاہم مریضوں کے بڑھتے ہوئے بوجھ کے سبب مسائل بھی رہے تاہم بروقت حکمت عملی بنا کر ان مسائل کا فوری حل نکالا گیا ہے۔

سرگرم

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...