امریکی پابندیاں بیکار ثابت، ہواوے کو 122ارب ڈاکر کی ریکارڈ آمدن

  امریکی پابندیاں بیکار ثابت، ہواوے کو 122ارب ڈاکر کی ریکارڈ آمدن

  



بیجنگ(آئی این پی)تمام تر امریکی پابندیوں کے باجود چینی کمپنی ہواوے کی ترقی کا سفر جاری ہے، اس کے غیرمستقل چیئرمین ایرک زو نے نئے سال کے پیغام میں کہا ہے کہ 2019 کے دوران کمپنی کی آمدنی 850 ارب یوان (122 ارب ڈالر)رہی ہے۔چیئرمین کا کہنا تھا کہ کمپنی کے لیے یہ نیا ریکارڈ ہے، گزشتہ برس کے مقابلے میں اس کی آمدنی میں 18 فیصد اضافہ ہوا ہے۔انہوں نے بتایا کہ ہواوے 24 کروڑ فونز کی فروخت کے ساتھ دنیا میں دوسرے نمبر پر رہی ہے، گزشتہ برس یہ تعداد 20 کروڑ 60 لاکھ تھی۔ایرک زو نے کہا کہ یہ اعداد و شمار ہمارے ابتدائی تخمینوں سے کم ہیں تاہم کاروبار مضبوط بنیادوں پر قائم ہے اور مشکلات کے باوجود ہم ڈٹ کر کھڑے ہیں۔انہوں نے تسلیم کیا کہ امریکہ ایک حکمت عملی اور تسلسل کے ساتھ ہواوے کے خلاف مہم چلا رہا ہے جس کے باعث بہت سی مشکلات پیش آ رہی ہیں اور اگر یہ مہم جاری رہی تو مشکلات میں اضافہ ہو گا۔ان کا کہنا تھا کہ کمپنی کے لیے 2020 اپنی بقا کا سال ہو گا۔اسی سال امریکہ کے کامرس ڈپارٹمنٹ نے ہواوے کو بلیک لسٹ کر دیا تھا اور امریکی کمپنیوں سے تجارتی تعلقات رکھنے پر پابندی لگا دی تھی۔امریکہ نے اپنے اتحادیوں سے بھی کہا تھا کہ وہ چینی کمپنی کی مصنوعات استعمال کرنے سے گریز کریں، اس نے الزام لگایا تھا کہ ہواوے کے پرزوں سے قومی سلامتی کو خطرات لاحق ہیں۔

مزید : عالمی منظر /راولپنڈی صفحہ آخر