قتل اور زخمی کرنے والے ملزم کی ضمانت منظور

    قتل اور زخمی کرنے والے ملزم کی ضمانت منظور

  



پشاور(نیوزرپورٹر)پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس صاحبزادہ اسد اللہ نے ایک شخص کو قتل اور دوسرے کو زخمی کرنے کے مقدمے میں نامزد ملزم کی ضمانت پر رہائی کے احکامات جاری کردیئے ملزم دلبرکی جانب سے کیس کی پیروی میاں ارشد جان ایڈوکیٹ نے کی دوران سماعت ملزم کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ اس کے موکل پر الزام ہے کہ انہوں نے پولیس سٹیشن اضاخیل کی حدود میں 24 ستمبر 2019 کو رہزنی کی ایک مبینہ واردات کے دوران فائرنگ کرکے عاصم کو قتل جبکہ عمران کو زخمی کیا ہے انہوں نے عدالت کو بتایا کہ یہ ایک ڈمپر کا ڈرائیور جبکہ دوسرا کنڈیکٹر تھا میاں ارشد جان ایڈوکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ ابتدائی طور پر ایف آئی آر میں 7 افراد پر دعویداری ظاہر کی گئی جس میں زخمی عمران نے بعد میں اپنا بیان بدل دیا اور پولیس کے ایما پر اس کے موکل کو اس کیس میں نامزد کیا انہوں نے عدالت کو بتایا کہ اس کے موکل دلبر ایک دوسرے ملزم سلیمان کی جانب سے اعتراف جرم کے بعد اس کیس میں نامزد ہوا ہے دوران سماعت انہوں نے عدالت کو بتایا کہ موقع سے ملنے والی شہادتوں میں کافی تضاد پایا جاتا ہے اور اس کیس کے دیگر ملزمان کی تعداد کا تعین بھی نہیں ہو سکا اس کے ساتھ ساتھ موقع سے ملنے والے کارتوس کے خالی خول مختلف ہتھیاروں سے فائر کئے گئے ہیں لہذا اس اسٹیج پر کہ کس نے کس پر فائرنگ کی کہنا قبل از وقت ہے اور اس وقت تک اس کے موکل کو جیل میں نہیں رکھا جا سکتا دوسری جانب سرکار وکیل نے ملزم کی ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست مسترد کرنے کی درخواست کی عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر ملزم کو ضمانت پر رہا کرنے کے احکامات جاری کر دیئے

مزید : پشاورصفحہ آخر