ہیروئن سمگلنگ کیس کا مقدمہ ٹرائل کورٹ میں شروع کرنے کے احکامات

ہیروئن سمگلنگ کیس کا مقدمہ ٹرائل کورٹ میں شروع کرنے کے احکامات

  



پشاور(نیوزرپورٹر)عدالت عالیہ پشاور میں ہیروئن سمگلنگ کیس کی تین ماہ میں چالان مکمل کرنے اور کیس کا ٹرائل کورٹ میں مقدمہ شروع کرنے کے احکامات جاری کردئیے، پشاور ہائیکورٹ کے جسٹس صاحبزادہ اسد اللہ نے کیس کی سماعت کی۔ اے این ایف کی جانب سے وقاص ایڈووکیٹ عدالت عالیہ میں پیش ہوئے، استعاثہ کے مطابق گل مست خان پر پشاور سے پنجاب منشیات سمگل کرنیکا الزام ہے، کتنا منشیات لیکر جارہا تھاجسٹس صاحبزادہ اسداللہ نے استفسار کیا جس پر بتایا گیا کہ چھ کلو لیکر جارہا تھا، جس کے بعد جسٹس صاحبزادہ اسد اللہ نے درخواست گزار کے وکیل سے استسفار کیا کہ آپ کا اس حوالے سے کیا موقف ہے کیا چاہتے ہیں، جس پر درخواست گذار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ٹرائل کورٹ میں چالان مکمل کرکے ایک ماہ میں سماعت شروع کی جائے، میڈیکل ایشو ہے اور ملزم کی عمر بھی ساٹھ سال ہے، فاضل بنچ نے تین ماہ میں چالان مکمل کرنے اور کیس کا ٹرائل شروع کرنے کے احکامات نے جاری کردئیے

مزید : پشاورصفحہ آخر