ڈیرہ،آر پی او کا جنوبی وزیر ستان کے مختلف علاقوں کا دورہ

    ڈیرہ،آر پی او کا جنوبی وزیر ستان کے مختلف علاقوں کا دورہ

  



ڈیرہ اسماعیل خان(بیورورپورٹ) ریجنل پولیس آفیسر ڈیرہ رینج فلائیٹ لیفٹیننٹ(ر) سید امتیاز شاہ نے ضلع جنوبی وزیرستان کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا۔دورہ کے دوران ریجنل پولیس چیف ڈیرہ رینج نے انگور اڈا (افغانستان بارڈر)، پولیس سٹیشن لدھا، مکین، سروکئی، کانیگرم، شکئی و دیگر مختلف علاقوں و مقامات کا دورہ کیا ضلعی پولیس سربراہ جنوبی وزیرستان شفیق خان اور دیگر پولیس افسران بھی اس موقع پر انکے ہمراہ تھے۔دورہ کے دوران ریجنل پولیس آفیسر نے مختلف پولیس پوسٹوں پر تعینات پولیس اہلکاروں سے ملاقاتیں کیں اور ضلعی پولیس سربراہ جنوبی وزیرستان شفیق خان کو ہدایات دیں کہ تمام تھانہ جات و پوسٹوں پر تعینات پولیس اہلکاروں کو ہر وقسم کی سہولیات فراہم کی جائیں تاکہ بدوران ڈیوٹی کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نا ہو۔خصوصاً انگور اڈا یا دور دراز علاقوں میں تعینات پولیس اہلکاروں کے ساتھ مکمل رابطہ بحال رکھا جائے اور کسی بھی قسم کی غیر قانونی آمدورفت، سمگلنگ،نان کسٹم پیڈ اشیا، سامان اور گاڑیوں کے خلاف بھر کاروائیاں جاری رکھیں اور کسی بھی قسم کی غیر قانونی آمد و رفت پر کڑی نگرانی رکھی جائے اور علاقہ میں قانون کی بالا دستی کے لیے ہر ممکن اقدامات لیے جائیں اور عام عوام کو زیادہ زیادہ سہولیات فراہم کرنے کے حوالے ہر قسم کے وسائل برائے کار لائے جائیں اور عام کے ہر جائز مسائل کو ترجیح بنیادوں ہر حل کیا جائے۔آخر میں ریجنل پولیس آفیسر ڈیرہ نے جنوبی وزیرستان میں محسود اور وزیر مشران کے جرگہ میں شرکت کی اور وزیرستان کو لوگوں کو درپیش مسائل کے بارے آگاہی حاصل کی اور جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہماری ہر ممکن کوشش ہے کہ جنوبی وزیرستان کے لوگوں کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں اور آپکے تمام مسائل کا حل اور فوری طور پر ان کا تدارک کیا جائے اور پولیس کی جانب سے آپ کے لیے زیادہ سے زیادہ آسانیاں پیدا کی جائیں تاکہ آپ لوگ اپنے علاقہ میں امن کے ساتھ رہیں اور وہ تمام حقوق آپ کو حاصل ہوں جو ہر ایک پاکستانی شہری کو حاصل ہیں اور وزیرستان بھی پاکستان کے دوسرے شہروں کی طرح ترقی کی راہ پر گامزن ہو۔ جنوبی وزیرستان اور اس کی عوام کی بہتری کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھانا ہماری اولین ترجیح ہے اور اسی مقصد کے لیے پولیس کے قابل اور سینئر افسران کو یہاں تعینات کیا گیا ہے تاکہ یہاں جلد سے جلد پولیس کے نظام کو مزید بہتر کیا جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...