قانونی حلقوں کی تنقید،چیف جسٹس سردار شمیم نے ریٹائرمنٹ سے قبل 4افسروں کے تقررکے احکامات واپس لے لئے

قانونی حلقوں کی تنقید،چیف جسٹس سردار شمیم نے ریٹائرمنٹ سے قبل 4افسروں کے ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سردارشمیم خان نے اپنی ریٹائرمنٹ سے 4روز قبل جن 4افسروں کو لاہور ہائی کورٹ میں براہ راست بھرتی کیاتھاان کے تقررکے احکامات واپس لے لئے ہیں۔چیف جسٹس نے اپنے صوابدیدی اختیارات کے تحت 27 دسمبر کو 4افراد کے تقررکاحکم نامہ جاری کیاتھا،جسے قانونی حلقوں کی طرف سے شدید تنقید کا نشانہ بنایاگیا،ایک وکیل کی طرف سے ان تقرریوں کو لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج بھی کیا گیا، گزشتہ روز اپنی ریٹائرمنٹ کے دن چیف جسٹس نے یہ تقررنامہ واپس لے لیا،چیف جسٹس سردار محمد شمیم خان نے 3افراد عاطف گلزار، عمار عزیز اور سید فہد افتخار کو18ویں گریڈ میں اسسٹنٹ رجسٹرارجبکہ سیف اللہ کوگریڈ17میں ایڈمن افسر بھرتی کیا تھا، چیف جسٹس کی طرف سے سینئر پروٹوکول افسر سید سجاد حیدر کا کیڈر تبدیل کرکے انہیں ایڈیشنل رجسٹرار پروٹوکول مقررکرنے کا نوٹیفکیشن بھی واپس لے لیاگیاہے،ان تقرریوں کے حوالے سے تنقید کی جارہی تھی کہ سپریم کورٹ 2016ء میں چودھری محمد اکرم کیس میں اعلیٰ عدلیہ میں براہ راست بھرتیوں کے حوالے سے صوابدیدی اختیارات کو غیرقانونی قرار دے چکی ہے، یہ بھی معلوم ہواہے کہ سپریم کورٹ کے جس بنچ نے اعلیٰ عدالتوں میں براہ راست بھرتیوں کے اقدام کو کالعدم کیا تھا اس میں موجود ہ چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس گلزاراحمد بھی شامل تھے،چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سردارمحمدشمیم خان نے اپنی ریٹائرمنٹ سے قبل جو آخری حکم نامہ جاری کیاہے وہ اپنے 27دسمبر کے تقررنامے واپس لینے کاہے۔گزشتہ روز میاں مقصود احمد نامی وکیل نے ان افسروں کے تقررکے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں درخواست بھی دائر کی تھی، جس میں کہا گیا تھا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے برعکس لاہور ہائیکورٹ میں ان بھرتیوں کے لئے اخبار میں اشتہارنہیں دیاگیااورنہ ہی ٹیسٹ،انٹرویو اورمیرٹ کو مدنظر رکھا گیا، درخواست میں کہاگیاہے کہ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ سردار شمیم احمد خان نے اپنی ریٹائرمنٹ سے 4 دن قبل 4 افراد کوبھرتی کرنے کی منظوری دی،ریٹائرمنٹ سے چند روز قبل چیف جسٹس کا منظور نظر افراد کو بھرتی کرنا بدنیتی ہے،ان بھرتیوں کو غیر آئینی اورغیر قانونی قراردے کرکالعدم کیا جائے تاہم اب چیف جسٹس نے خود ہی ان تقرریوں کا نوٹیفکیشن واپس لے لیاہے۔

چار افسروں کا تقرر

مزید : صفحہ آخر


loading...