2020ء میں چین، پاکستان اقتصادی راہداری کے ثمرات نظر آنا شروع ہوجائینگے: اسد عمر 

    2020ء میں چین، پاکستان اقتصادی راہداری کے ثمرات نظر آنا شروع ہوجائینگے: ...

  



لاہور(این این آئی) وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسدعمرنے کہاہے کہ سال 2020ء کے دوران چین پاکستان اقتصادی راہداری کے ثمرات نظرآناشروع ہوجائیں گے جن سے صنعت اورزراعت سمیت معیشت کے پیداواری شعبوں پرمثبت اثرات مرتب ہو ں گے۔ایک انٹر ویو میں انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان کوفلاحی ریاست بنانے پرپختہ یقین رکھتی ہے اور حکومت نے مالی سال 2020ء کے بجٹ میں وزیراعظم کے احساس پروگرام کے تحت غریبوں کی فلاح وبہبود کے لئے حکومتی اخراجات میں واضح اضافہ کیاہے۔انہوں نے کہاکہ سی پیک کے تحت 2020ء میں مکمل ہونے والے بڑے منصوبوں میں تجارت اور شاہراہ قراقرم کے دوسرے مرحلے میں حویلیاں سے تھاکوٹ کی 118کلومیٹر اور سکھر سے ملتان کی 392کلومیٹر طویل ہائی وے کی تعمیر کے ٹرانسپورٹ کے روابط کے منصوبے مکمل کرنے کاہدف مقررکیاگیاہے۔وفاقی وزیرنے کہاکہ ان منصوبوں سے سفر کادورانیہ کم کرنے اورمصنوعات کی تجارت اور خدمات کی فراہمی میں اضافہ کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہاکہ چین کی جانب سے گوادر میں ہوائی اڈے کی تعمیراورسڑکوں کے بنیادی ڈھانچے کی بہتری کیلئے 40ارب روپے کی گرانٹ کی سرمایہ کاری کی جارہی ہے۔2020ء میں سی پیک کے تحت 9ارب ڈالرکی لاگت سے ریلوے کی مین لائن کواپ گریڈ کرنے کابڑامنصوبہ شروع کیاجائے گاجس سے خدمات کی فراہمی اور مصنوعات کی تجارت کے لئے ریلوے کے بنیادی ڈھانچے کوبہتربنانے میں مدد ملے گی۔

 اسدعمر

مزید : صفحہ آخر