پولیس نے مغوی کو ٹریس کرکے والد سے بات کرادی

  پولیس نے مغوی کو ٹریس کرکے والد سے بات کرادی

  



لاہور(کرائم رپورٹر)ڈی آئی جی انویسٹی گیشن ڈاکٹر انعام وحید خان کی صدر ڈویڑن میں کھلی کچہری میں احکامات کے بعد اے ایس پی رائیونڈ اور انچارج انویسٹی گیشن حرکت میں آگئے،بتایا گیا ہے کہ ڈی آئی جی انویسٹی گیشن کی گرین ٹاون میں کھلی کچہری کے دوران سائلہ رخسانہ بی بی نے درخواست دی تھی کہ اس کے بیٹے کو اغوا کیا گیا اور پولیس بیٹے کی بازیابی کے لیے مدد نہیں کر رہی، اس موقع پرڈی آئی جی نے ایس پی صدر انویسٹی گیشن منصور قمرکی ٹیم کو بازیابی کے حوالے سے ٹاسک سونپا، انویسٹی گیشن پولیس نے مشتبہ افراد کی موبائل فون کالز ٹریس کی اورمغوی معاذ علی کی والد کے ساتھ واٹس ایپ ویڈیو کال کروائی گئی ہے،معاذ علی نے والد کو بتایا کہ وہ اس وقت ترکی میں ہے اور خیریت سے ہے اور اپنی مرضی سے آیا ہے،مغوی معاذ علی اپنی مرضی سے دوستوں کے ساتھ غیر قانونی طورپر بارڈر کراس کر کے ترکی چلا گیا ہے،مغوی کے والدین نے تھانہ مانگا منڈی میں 15روز قبل بچے کے اغوا کا مقدمہ درج کروایا تھا۔

مغوی ٹریس

مزید : علاقائی


loading...