15 ارب لاگت کانامکمل نیلم جہلم پراجیکٹ 404 ارب تک پہنچ گیا

  15 ارب لاگت کانامکمل نیلم جہلم پراجیکٹ 404 ارب تک پہنچ گیا

  



اسلام آباد (آن لائن)969میگا واٹ کے نیلم جہلم پاور منصوبہ کی تکمیل میں تاخیر15 ارب روپے سے شروع ہونیوالے اس منصوبے کی لاگت 404 ارب روپے تک پہنچ گئی ہے۔ نیلم جہلم منصوبہ کاغذات کے مطابق مکمل ہو چکاہے مگر تاحال بجلی صارفین سے10 پیسے فی یونٹ کیوں ادا کر رہے ہیں؟ چیئر مین قائمہ کمیٹی منصوبہ بندی و ترقی جنید اکبر کاسوال۔ قائمہ کمیٹی منصوبہ بندی و ترقی کے اجلاس میں چیئرمین کمیٹی جنید اکبر نے کہاکہ اس منصوبے کا دسمبر2017ء میں مکمل ہونے کا بتا یا گیا تھامگر اب فروری 2018ء کا بتایا جا رہا ہے۔ 15 ارب روپے سے شروع ہونے والے اس منصوبے کی لاگت 404 ارب روپے تک پہنچ گئی ہے پھر بھی مقررہ وقت میں منصوبے کی تکمیل ہوتی نظر نہیں آ رہی قائمہ کمیٹی برائے منصوبہ بندی و ترقی میں 969 میگا واٹ کے نیلم جہلم پاور منصوبہ کی تکمیل میں تاخیر اور 15 ارب روپے سے شروع ہونے والے اس منصوبے کی لاگت 404 ارب روپے تک پہنچنے پر ممبران نے افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ کہ سرکاری کاغذات کے مطابق نیلم جہلم منصوبہ مکمل ہو چکاہے مگر تاحال بجلی صارفین 10 پیسے فی یونٹ ادا کر رہے ہیں۔ عوام کو عملی طور پر ریلیف دی جائے نہ کہ کہانیاں سنائی جائیں اس کے جواب میں نیلم جہلم ہائیڈروو پراجیکٹ کے سی ای او بریگیڈیئر(ر) محمد زرین نے قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی منصوبہ بندی و ترقی کو بتایا کہ نیلم جہلم منصوبے کی بجلی فروخت کیلئے کوئی معاہدہ نہیں۔ نیلم جہلم سرچارج کی مد میں اب تک 70 ارب روپے جمع ہوئے،۔

نیلم جہلم پراجیکٹ

مزید : علاقائی