2019میں بھی کشمیر اور فلسطین آزاد نہ ہو سکے،لیاقت بلوچ

  2019میں بھی کشمیر اور فلسطین آزاد نہ ہو سکے،لیاقت بلوچ

  



 لاہور (نمائندہ خصوصی) نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے منصورہ میں جے آئی یوتھ آزاد جموں و کشمیر او ر بیرون ملک پاکستانیوں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ 2019 ء بیت گیا لیکن کشمیر اور فلسطین کے عوام آزادی سے محروم رہے۔ عالمی برادری نے اپنی جانبداری اور تعصب بیتے سال میں بھی قائم رکھا۔ عالم اسلام اتحاد کی بجائے مزید ٹکڑے ہواہے۔ 2020 ء کو اسلامی، خوشحال اور وحدت امت کا سال بنا کر ملت اسلامیہ کو بحرانوں سے نکالا جائے۔ پاکستان ہوش کے ناخن لے اور بھارتی ظلم، غیر انسانی، غیر جمہوری اور عالمی چارٹر کی پامالی کے خلاف دو ٹوک قومی پالیسی بنائے۔

 لیاقت بلوچ نے کہاکہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں نریندر مودی کے تمام متنازع و غیر آئینی اقدامات اور قابض بھارتی فوج کے ظلم و جبر کے باوجود حریت پسندوں نے سرنڈر نہیں کیا۔ کشمیری اپنی لازوال قربانیوں پر کوئی سودے بازی کرنے کے لیے تیار نہیں۔ نریندر مودی سرکار نے مسلمانوں کے خلاف سٹیزن ایکٹ میں ترمیم کے ذریعے مسلمانوں سے نفرت کا کھلا اظہار کردیااور مسلمانوں کو دوسرے درجہ کا شہری قرار دے کر تمام عالمی چارٹرز کا منہ چڑایا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...