2019میں صحت کا شعبہ ترقی کے بجائے زوال پذیر ہوا

    2019میں صحت کا شعبہ ترقی کے بجائے زوال پذیر ہوا

  



لاہور(جنرل رپورٹر)پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن، گزشتہ کئی سالوں سے صحت کے مسائل کو اُجاگر کرتی رہی ہے۔ پی ایم اے نے ہمیشہ اپنی تجاویز اور مطالبات حکومت کے سامنے منظوری کے لئے پیش کیے۔ لیکن بدقسمتی سے ہماری آواز سے کسی بھی حکومت کے کانوں پر جُوں تک نہیں رینگی۔اسی لئے2019میں صحت کے شعبے میں کوئی تبدیلی رونما نہیں ہوئی بلکہ بہتری کے بجائے صحت کی صورتحال ابتری کا شکار ہوئی ہے۔ پولیو کے 100سے زیادہ راؤنڈ ہو جانے کے باوجود پولیو کا خاتمہ نہیں ہو سکا۔ہمارا پولیو پروگرام تنزلی کا شکار ہو رہا ہے۔پچھلے سال لگ رہا تھا کہ ہم پولیو کے خاتمے کے قریب پہنچ چکے ہیں لیکن اس سال 117کیس رپورٹ ہو چکے ہیں (کے پی کے۔83،  سندھ۔19، بلوچستان۔09، پنجاب۔06)جبکہ 2018میں 12 کیس رپورٹ ہوئے تھے۔یہ بڑی بد قسمتی کی بات ہے کہ انٹرنیشنل مانیٹرنگ بورڈ (IMB) نے ہمارے پولیو پروگرام کو سیاسی فٹبال قرار دیا اور یہ بھی کہا کہ پولیو کے خاتمے کی مہم میں سیاسی اتحاد کی کمی نظر آتی ہے۔۔

مزید : میٹروپولیٹن 1