حکومت فن خطاطی کو زندہ رکھنے کیلئے وسائل مہیا کرے،عکاشہ مجاہد

حکومت فن خطاطی کو زندہ رکھنے کیلئے وسائل مہیا کرے،عکاشہ مجاہد

  



لاہور(پ ر) حکومت خطاطی کی سرپرستی کرے اوراس عظیم فن کوزندہ رکھنے کے لئے وسائل بروئے کارلائے جائیں،اس لئے کہ خطاطی مسلمانوں کاتہذیبی ثقافتی اورعلمی ورثہ ہے اس ورثہ کی حفاظت وقت کی اہم ضرورت ہے،جوقومیں اپنے ثقافتی اورعلمی ورثہ کی حفاظت نہ کریں وہ مٹ جایاکرتی ہیں۔خطاطی کومسلمانوں نے کئی صدیوں تک اپنے خون سے سینچا،سنوارااورپروان چڑھایا ہے،ضروری ہے کہ ہم یہ فن زندہ رکھیں خطاطی خودسیکھیں بچوں کوسیکھائیں اوراسے نصاب کی کتابوں میں شامل کریں۔ اس بات کا اظہار ”عکاشہ کیلیگرافی فاؤنڈیشن کے چئیرمین عربی اورانگلش کے معروف خطاط عکاشہ مجاہد نے کیا۔انہوں کہا کہ خطاطی صرف رنگ بکھیرنے کانام ہی نہیں بلکہ خطاطی پر عبوررکھنے والا عمدہ سوچ اورفکر کابھی حامل ہوتا ہے، خطاطی سے انسان کی شخصیت میں نکھارپیداہوتااور تخلیقی صلاحیتوں کااظہارہوتا ہے۔

اس لئے کہ اس میں لکھنے والے کے تمام احساسات،جذبات اور نفسیات شامل ہوتی ہیں۔ہاتھ سے لکھی گئی تحریر ذہن پر نقش ہوجاتی ہے۔گوکہ آج نیٹ،کمیپوٹر اورکیمپوزنگ کا دور ہے لیکن خطاطی ایک گلاب ہے،یہ بہت نفیس،خوبصورت اورپاکیزہ آرٹ ہے۔ خطاطی میں صبر اور مسلسل ریاضت کی ضرورت ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ہم اپنے بچوں بچیوں کو خطاطی سیکھائیں،حکومت کو چاہئے کہ وہ خطاطی کافن نصاب کی کتابوں میں شامل کرے۔عکاشہ مجاہد نے کہا کہ ہماری فاؤنڈیشن اس عظیم فن کوزندہ رکھنے اورپروان چڑھانے کے لئے کوشاں ہے اس مقصد کی خاطرمختلف تعلیمی اداروں،لائبریریوں میں خطاطی ورکشاپ کاانعقادکیاجاتاہے جن میں بچوں بچیوں کومفت تعلیم دی جاتی ہے۔ اگرحکومت ہمارے ساتھ تعاون کرے توبڑے پیمانے پر سکولوں کالجوں کے بچوں بچیوں کوخطاطی سیکھانے کااہتمام کرسکتے ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1