کراچی سمیت سندھ بھر میں گیس بحران مزید شدت اختیار کر گیا

کراچی سمیت سندھ بھر میں گیس بحران مزید شدت اختیار کر گیا

  



کراچی(اکنامک رپورٹر)شہر قائد سمیت سندھ بھر میں گیس بحران مزید شدت اختیار کر گیا ہے، سی این جی اسٹیشنز منگل کوشیڈول سے ہٹ کر بند کردیئے گئے۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں سی این جی اسٹیشنز کومسلسل بندش کا سامناہے منگل کوبھی سی این جی اسٹیشنز شیڈول سے ہٹ کر بند کردیئے گئے،گزشتہ15 دنوں میں سی این جی اسٹیشنز مجموعی طور پر صرف 4 دن کھلے ہیں۔ذرائع کے مطابق4 دن کے دوران گیس کے کم دباؤ پر بیش تر اسٹیشن بند کر دیئے گئے، سی این جی ایسوسی ایشن نے اپنے ردعمل میں کہاکہ حکومت عوام کے دیرینہ مسئلے پر کوئی توجہ نہیں دے رہی ہے۔دوسری طرف سائٹ، ناظم آباد، نارتھ کراچی، بفرزون، لانڈھی، کورنگی اور دیگر علاقوں گیس کا دباؤ نہایت کم ہو گیا ہے، کراچی کے پانچوں صنعتی زونز گیس کی لوڈ شڈنگ سے شدید متاثر ہو چکے ہیں اور پیداوار بند ہو چکی ہے۔ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن ذرائع کا کہنا ہے کہ گیس نہ ہونے سے برآمدی آرڈر کی بر وقت تکمیل ممکن نہیں رہی، صنعتی پیداوار نہ ہونے سے مزدور بھی بے روزگار ہو رہے ہیں۔دوسری جانب سوئی سدرن گیس کمپنی کے ترجمان کے مطابق مختلف گیس فیلڈز سے ایس ایس جی سی کو میسر ہونے والی گیس کی مقدار میں کمی واقع ہوئی ہے۔ گیس کی سپلائی کم ہونے سے گھریلو اور کمرشل صارفین کو گیس پہنچانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔ پریشر کی کمی کے باعث سی این جی اسٹیشنز کو مزید 24 گھنٹے بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ترجمان کے مطابق ایس ایس جی سی مینجمنٹ پریشر کا جائزہ لے رہی ہے جیسے ہی گیس پریشر میں بہتری آئی تو سی این جی اسٹیشنز کو گیس کی ترسیل بحال کر دی جائے گی، حکومت پاکستان کے لوڈ مینجمنٹ کے حوالے سے سب سے پہلے گھریلو اور کمرشل صارفین کو گیس پہنچانا اولین ترجیحات میں شامل ہے۔

مزید : صفحہ اول