” میں پاکستان جانے کیلئے تیار ہوں لیکن کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ ۔۔۔“ بنگلہ دیش ٹیم کے ہیڈ کوچ نے اپنے کرکٹ بورڈ پر بجلیاں گرا دیں

” میں پاکستان جانے کیلئے تیار ہوں لیکن کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ ۔۔۔“ بنگلہ دیش ...
” میں پاکستان جانے کیلئے تیار ہوں لیکن کچھ لوگ چاہتے ہیں کہ ۔۔۔“ بنگلہ دیش ٹیم کے ہیڈ کوچ نے اپنے کرکٹ بورڈ پر بجلیاں گرا دیں

  



ڈھاکا(ڈیلی پاکستان آن لائن)بنگلا دیش کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ رسل ڈومنگو نے اعتراف کیا ہے کہ کچھ لوگ پاکستان جانا ہی نہیں چاہتے اس لئے کرکٹ بورڈ ٹیم بھیجنے سے ہچکچا رہاہے۔تاہم انہیں ٹیم کے ساتھ پاکستان جانے میں کوئی اعتراض نہیں ہے۔رسل نے کہا کہ ٹیم کے پاکستان جانے یا نہ جانے کا فیصلہ بورڈ نے کرناہے اور انہیں اس سے کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کی جانب سے دورہ پاکستان سے متعلق حیلے بہانوں سے کام لے رہا ہے تاہم اب کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ رسل ڈومنگو نے تسلیم کیا ہے کہ کچھ لوگ ایسے ہی جو پاکستان جانے کے حق میں نہیں ہیںالبتہ وہ ٹیم کے ساتھ جانے کو تیار ہیں۔رسل نے کہا کہ دورے کا حتمی فیصلہ بورڈ نے ہی کرنا ہے۔

نیو ایج کو ٹیلی فون پر انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر ٹیم کو کلیئرنس مل جاتی ہے تو وہ ضرور جائیں گے۔انہوں نے کہا وہ سمجھتے ہیں کہ اس مسئلے کو بات چیت سے ہی حل کیاجاسکتا ہے۔ہمیں اس معاملے پربورڈ سے بات کرنی چاہئے پھر دیکھنا ہوگا کہ بورڈ کیا فیصلہ کرتا ہے۔

واضح رہے کہ بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم نے شیڈول کے مطابق ٹی ٹونٹی اور ٹیسٹ سیریزکیلئے پاکستان کا دورہ کرناہے لیکن یہ دورہ اس وقت غیر یقینی صورت حال سے دوچارہے۔بنگلہ دیش ٹیسٹ میچز نہ کھیلنے جبکہ پاکستان کرکٹ بورڈپاکستان میں ہی پہلے ٹیسٹ سیریزکھیلنے کے فیصلے پر قائم ہے۔اطلاعات کے مطابق بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان سکیورٹی نہیں سیاست کی وجہ سے غیر یقینی صورتحال سے دوچارہے، بنگلہ دیش میں کچھ حلقے پاکستان کے دورے کے حق میں نہیں ہیں اور ان حلقوں کو بھارت کی جانب سے ہدایات مل رہی ہیں ‘ بھارت کسی بھی صورت پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی نہیں چاہتا اس لئے کبھی بورڈ حکام اور کبھی کھلاڑیوں کو دھمکیاں دی جاتی ہیں۔

قبل ازیں بھی ایسی اطلاعات سامنے کچھ حلقوں نے بورڈ اراکین پر دورے کی مخالفت کیلئے دباڈالااور بورڈ اراکین نے اجلاس میں پاکستان کے دورے کی کھل کر مخالفت کی جبکہ بعض کرکٹرز بھی پاکستان کے دورے کے حامی نہیں ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ بنگلہ دیش بورڈ اراکین نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے بنگلہ دیش کا دورہ ہونے کی وجہ سے آئی سی سی میں جانے کی دھمکی کو بھی پریشان کن قرار نہیں دیا۔بنگلہ دیش بورڈ نے فوری طور پر پاکستان میں ٹیسٹ سیریز نہ کھیلنے کے حوالے سے پی سی بی کو بتایاہے جبکہ اس کی کوئی مضبوط وجہ نہیں بتائی گئی۔

پی سی بی نے بنگلہ دیش کو دو بار خط لکھ کر اس کی وجہ پوچھی ہے جس میں انہیں صدارتی لیول کی سیکیورٹی کی یقین دہانی کے ساتھ کہاگیاہے کہ سری لنکا کرکٹ ٹیم کے کامیاب دورے کے بعد بنگلہ دیش کے پاس انکار کی کوئی وجہ نہیں ہے۔پی سی بی نے ٹیسٹ سیریز جب کہ بنگلہ دیش نے پہلے ٹی ٹوئنٹی سیریز کھیلنے کا کہا ہے۔ بنگلہ دیش ٹیسٹ سیریز نیوٹرل وینیو پر کھیلنے کیلئے بضد ہے جبکہ پی سی بی نیو ٹرل وینیو پر سیریز نہ کھیلنے کے فیصلے پر قائم ہے۔

 یاد رہے کہ سری لنکن کرکٹ ٹیم پاکستان میں کامیاب ٹورنامنٹ کے انعقاد کے بعد پاکستان میں سکیورٹی صورتحال کو بہترین قرار دے چکی ہے،پاکستانی میدانوں مٰیں ہونے والے پاک لنکا میچز پر دنیا بھر سے مثبت تبصرے اور تاثرات سامنے آئے تھے۔

سری لنکن ٹیم کی آمد پر جہاں دیگر تمام پاکستانیوں نے لنکن بورڈ کا شکریہ اداکیا تھا وہیں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بھی اظہارتشکر  کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا  کہ بنگلہ دیشی ٹیم نے بھارت کے دباؤ کے سبب پاکستان آنے سے انکار کیا۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اہم قومی امور پر روشنی ڈالنے کے ساتھ ساتھ حال ہی ٹیسٹ کے لیے پاکستان آنے والی سری لنکن ٹیم کا شکریہ بھی ادا کیا تھا اور بنگلہ دیش کے پاکستان نہ آنے پر بھی بات کی تھی۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ سری لنکن کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان پر شکر گزار ہیں، ہم نے انہیں بھرپور سیکیورٹی دی۔

ان کا کہنا تھا کہ بنگلہ دیش کی ٹیم پاکستان آنے کو تیار تھی لیکن شاید بھارتی دباؤ کی وجہ سے انہوں سے انکار کیا لیکن بنگلہ دیش کو اپنے موقف پر قائم رہتے ہوئے کسی کے بھی دباؤ میں نہیں آنا چاہیے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ اگر بنگلہ دیش کی ٹیم پاکستان کا دورہ کرتی تو ہم انہیں بھی بھرپور سیکیورٹی فراہم کرتے۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے چیف ایگزیکٹو نظام الدین چوہدری نے کہا ہے کہ ہم اپنے موقف پر ڈٹے ہوئے ہیں، ہم پاکستان میں صرف ٹی20 میچز کھیلنا چاہتے ہیں، بنگلہ دیش طویل دورہ پاکستان کے حوالے سے شکوک و شبہات کا شکار ہے۔تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ نے بھی اس معاملے پر دوٹوک موقف اپناتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اپنے میچز اب ہوم گراؤنڈ پر ہی کھیلے گا اور بغیر کسی ٹھوس وجہ کے میچز پاکستان سے کہیں اور منتقل نہیں کیے جائیں گے۔

مزید : اہم خبریں /کھیل


loading...