وزیراعظم کہہ رہے ہیں یہ ترقی کا سال ہے ،پیپلزپارٹی اور فضل الرحمان کہہ رہے ہیں یہ تبدیلی کا سال ہے،اصل میں دونوں ۔۔۔وفاقی وزیر اسد عمر نے بڑی بات کہی دی

وزیراعظم کہہ رہے ہیں یہ ترقی کا سال ہے ،پیپلزپارٹی اور فضل الرحمان کہہ رہے ...
وزیراعظم کہہ رہے ہیں یہ ترقی کا سال ہے ،پیپلزپارٹی اور فضل الرحمان کہہ رہے ہیں یہ تبدیلی کا سال ہے،اصل میں دونوں ۔۔۔وفاقی وزیر اسد عمر نے بڑی بات کہی دی

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی وزیر اسد عمر نے کہاہے کہ وزیراعظم عمران خان کہہ رہے ہیں یہ ترقی کا سال ہے ،پیپلزپارٹی اور فضل الرحمان کہہ رہے ہیں یہ تبدیلی کا سال ہے،دونوں ٹھیک کہہ رہے ہیں،ترقی ہوگی تو تبدیلی آئےگی،بلاول بھٹوزرداری اور فضل الرحمان نے ترقی نہیں دیکھی۔

کراچی کے ترقیاتی منصوبوں پرپیش رفت کا جائزہ لیا گیا،چند ہفتے پہلے اجلاس میں بڑے فیصلے کرلیے گئے تھے،ایس آئی ڈی سی ایل منصوبوں کی تکمیل کیلئے تیزی سے کام کررہا ہے،کراچی کے بہت سے منصوبے مکمل ہونے والے ہیں،انہوں نے کہا کہ کراچی کا بڑا منصوبہ کے فور ہے،وزیراعظم عمران خان ترقیاتی منصوبوں کا افتتاح کریں گے،اسدعمرنے کہاکہ کراچی میں پانی کی شدید قلت ہے،پانی کی قلت ختم کرنے کیلئے کے فور اہم منصوبہ ہے،وفاقی وزیر نے کہا کہ گرین لائن منصوبے کیلئے فنڈز مہیاکردیئے گئے ہیں جس پرجلد کام شروع ہوگا،وفاقی منصوبوں کیلئے فوکل پرسن کا کردار واضح کیا گیا تھا،حکومت کے وسائل محدود ہیں لیکن کام کرنا ہے،مقامی حکومت کا نظام غیر فعال ہونے کے باوجود کام کر رہے ہیں۔

اسد عمر نے کہا کہ سندھ کا لوکل گورنمنٹ سسٹم آئین کے خلاف ہے،پہلے سہ ماہی میں سالانہ ترقیاتی فنڈ کم تھا لیکن بعد میں بہتر ہوا،اجلاس میں اتفاق ہوا کہ ترقیاتی منصوبوں پرکام میں بہتری ضروری ہے،وفاق کے سندھ حکومت کے ساتھ شدید سیاسی اختلافات ہیں،انہوں نے کہا کہ عوامی مسائل کے حل کیلئے سندھ حکومت کےساتھ کام کرنے کیلئے تیارہیں،حکومت کی شراکت کے بغیر نجی شعبے کو کام میں مشکل ہوتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وسیم اختر کراچی ٹرانسفارمیشن کمیٹی کے اجلاس میں شریک تھے،میئرکراچی وسیم اختر نے کسی قسم کے تحفظات کا اظہار نہیں کیا،میئرکراچی وسیم اختر بااختیار ہوتے تو زیادہ تیزی سے کام کرسکتے تھے،وفاق نے اپنا کام کرلیالیکن صوبائی حکومت نے نہیں کیا،اسد عمر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان بار بار کہتے ہیں کراچی کیلئے کچھ کرنا ہے۔

انہوںنے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات سے متعلق تقریر میں جو کہا وہ کرکے دکھایا،آئی ایم ایف سے معاہدے کے بعد پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کچھ اضافہ ہوا، آئی ایم ایف کےساتھ معاہدے کے بعدپٹرول پر ٹیکس پہلے سے کم ہے،انہوں نے کہا کہ الیکشن سے پہلے بھی بہت سی باتیں سنا کرتے تھے،کہا جاتاتھا پی ٹی آئی کراچی سے ایک سیٹ بھی نہیں جیت سکتی،اسد عمر نے کہا کہ پیپلزپارٹی مشکلات میں گھری ہوئی ہے،پیپلزپارٹی سیاسی طور پر ہاتھ پاوَں ضرور مارے گی،جمہوری نظام میں سیاست ہر پارٹی کا حق ہے، پیپلزپارٹی حکومت کی عوام میں جڑیں کمزور ہوچکی ہیں۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی


loading...