چوروں اور ڈاکوﺅں کو تحفظ دینے کیلئے اسمبلی اجلاس نہیں بلائیں گے: فیصل جاوید

چوروں اور ڈاکوﺅں کو تحفظ دینے کیلئے اسمبلی اجلاس نہیں بلائیں گے: فیصل جاوید
چوروں اور ڈاکوﺅں کو تحفظ دینے کیلئے اسمبلی اجلاس نہیں بلائیں گے: فیصل جاوید

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) سینیٹر فیصل جاوید کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نے قرضوں میں ڈوبی معیشت کو اوپر اٹھادیا ہے، 2020 عوام کا سال ہوگا، چوروں اور ڈاکوﺅں کو تحفظ دینے کیلئے اسمبلی کا اجلاس نہیں بلائیں گے، حکومت اصلاحات لا رہی ہے حالات ٹھیک ہونے میں وقت لگے گا۔

سینیٹ میں اظہار خیال کرتے ہوئے تحریک انصاف کے سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ حکومت نے 2019 میں بڑی کامیابیاں حاصل کیں، آج عالمی ادارے پاکستان میں معاشی بہتری کا اعتراف کر رہے ہیں۔ وزیر اعظم نے ناممکن کاموں کو ممکن بنا دیا،وزیر اعظم نے قرضوں میں ڈوبی معیشت کو نکالا،سابق حکومت نے 24 ہزار ارب کا قرضہ لیا اور یہ 24 ہزار ارب منی لانڈرنگ کرکے بیرون ملک منتقل کیے گئے،قرضوں کے پیسوں سے بیرون ملک جائیدادیں بنائی گئیں۔

سینیٹر فیصل جاوید کی تقریر کے دوران سینیٹر بہرہ مند تنگی نے شور شرابہ شروع کردیا، چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے انہیں خاموش رہنے کی ہدایت کی ۔ شور شرابہ ہونے کا جواب دیتے ہوئے سینیٹر فیصل جاوید نے کہا کہ غریب کی بات کرتے ہیں تو ایوان میں شور ہونے لگتا ہے،ہم نے اجلاس چوروں اور ڈاکوو¿ں کے تحفظ کیلئے نہیں بلانا، چارٹر آف کرپشن نے 10 سال میں ملکی حالات خراب کیے،حکومت اصلاحات لا رہی ہے حالات ٹھیک ہونے میں وقت لگے گا۔

انہوں نے کہا کہ 2020 عوام کا سال ہوگا،وزیر اعظم نے وزرا کو غریب آدمی کو ریلیف دینے کی ہدایت کی ہے،ہم نے ملک سے کرپشن اور منی لانڈرنگ کاخاتمہ کرناہے،غریب آدمی کو راشن کارڈ دیں گے،اپوزیشن کوپناہ گاہوں کے دورے کی دعوت دیتا ہوں،پناہ گاہوں میں تمام سہولیات میسرہیں۔

مزید : قومی