”ریمنڈڈیوس کوباہر بھیجنے کا فیصلہ ڈی جی آئی ایس آئی کا نہیں بلکہ۔۔۔“ لیفٹیننٹ جنرل (ر)امجد شعیب نے بڑی سیاسی شخصیت کو ذمہ دار قراردیدیا

”ریمنڈڈیوس کوباہر بھیجنے کا فیصلہ ڈی جی آئی ایس آئی کا نہیں بلکہ۔۔۔“ ...
”ریمنڈڈیوس کوباہر بھیجنے کا فیصلہ ڈی جی آئی ایس آئی کا نہیں بلکہ۔۔۔“ لیفٹیننٹ جنرل (ر)امجد شعیب نے بڑی سیاسی شخصیت کو ذمہ دار قراردیدیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)دفاعی تجزیہ کار لیفٹیننٹ جنرل (ر)امجد شعیب نے کہا ہے کہ ریمنڈ ڈیوس کو باہر بھیجنے کا فیصلہ آصف زرداری کا تھا، ایوان صدر میں میٹنگ ہوئی تھی، ریمنڈ ڈیوس کے معاملے میں ڈی جی آئی ایس آئی کے حوالے سے جھوٹ بولا گیا ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”آن دا فرنٹ“میں گفتگو کرتے ہوئے لیفٹیننٹ جنرل (ر)امجد شعیب نے کہا کہ حکومت کی پالیسی اورعوام کی حالت کے پیش نظر فوج سمیت ہر جگہ تحفظات ہیں۔انہوں نے کہا کہ اگر عوام مشکلات کاشکار ہیں تو ان کو اس سے کوئی غرض نہیں ہے کہ زرمبادلہ کے ذخائربڑھ گئے ہیں، ملک میں ایک اندھیرا ہے اورمسئلہ عمران خان کی ترجیحات میں ہے ۔ عمران خان جب بھی بات کرتے ہیں تو ان کی جانب سے پورا ہورم ورک نہیں کیاجاتا جس پر بعد میں ان کو یوٹرن لینا پڑتا ہے ۔

امجد شعیب کاکہنا تھا کہ جب تک آپ کے پاس روڈمیپ نہ ہوکہ کیا کرنا ہے تو آپ پانچ سال میں کیا کرکے دکھائیں گے؟ انہوں نے کہا کہ کون ساوقت تھا جہاں فوج نے ن لیگ یا پیپلز پارٹی کی حکومت کیلئے کام نہیں کیا ، خواہ ریمنڈ ڈیوس کا مسئلہ ہو یا یمن کامسئلہ ہوجب آپ وہاں فوج بھیجنے کیلئے ٹانگ پھنسا رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ اب جہاں تک اس حکومت کا تعلق ہے تو جب فوج کوئی غیر آئینی اقدام نہیں اٹھا نا چاہتی تو کیا کوئی دباﺅ آسکتا ہے ، کیا فوج نے کہا تھا کہ ماڈل ٹاﺅن میں13بندے ماردو اور ایف آئی آر نہ درج کرو؟ کیا فوج نے کہا تھا کہ چار حلقے نہ کھولو؟ یہ کام حکومتوں کے کرنے کے ہوتے ہیں لیکن جب نہیں کرتیں تو پھر ادھر ادھر کی باتیں کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ریمنڈ ڈیوس کو باہر بھیجنے کا فیصلہ آصف زرداری کا تھا،آصف زرداری نے ایوان صدر میں میٹنگ کی تھی،اس حوالے سے ڈی جی آئی ایس آئی سے متعلق جھوٹ بولا گیا ہے ۔

مزید : قومی


loading...