آرمی ایکٹ میں ترمیم،حکومت نے اپوزیشن سے مذاکرات کیلئے مشاورتی کمیٹی تشکیل دیدی

آرمی ایکٹ میں ترمیم،حکومت نے اپوزیشن سے مذاکرات کیلئے مشاورتی کمیٹی تشکیل ...
آرمی ایکٹ میں ترمیم،حکومت نے اپوزیشن سے مذاکرات کیلئے مشاورتی کمیٹی تشکیل دیدی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)حکومت نے پارلیمنٹ میں آرمی ایکٹ میں ترمیم سے متعلق اپوزیشن سے مشاورت کیلئے کمیٹی تشکیل دےدی ہے۔

تفصیلات کے مطابق آرمی ایکٹ میں ترمیم سے متعلق مشاورتی اجلاس کے بعد حکومت نے پارلیمنٹ میں آرمی ایکٹ میں ترمیم سے متعلق اپوزیشن سے مشاورت کیلئے کمیٹی تشکیل دےدی ہے ۔ کمیٹی میں علی محمد خان ، پرویز خٹک ، اعظم سواتی اور عامر ڈوگر شامل ہیں۔کمیٹی آرمی ایکٹ توسیع بل پر اپوزیشن سے مذاکرات کرے گی ۔

اس سے قبل وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے ہنگامی اجلاس میں وزارت دفاع اور وزارت قانون کی جانب سے آرمی ایکٹ کا ترمیم شدہ مسودہ پیش کیا گیا۔ وفاقی کابینہ نے آرمی ایکٹ میں ترمیم کی منظوری دے دی۔ آرمی ایکٹ میں ترمیم کے ذریعے وفاقی کابینہ نے چاروں سروسز چیفس کی ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھا دی ہے۔ اس ترمیم کا اطلاق چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی، آرمی چیف، چیف آف نیول سٹاف اور چیف آف ایئر سٹاف پر ہوگا۔ ترمیم کے بعد چاروں سروسز چیفس کی ریٹائرمنٹ کی مدت 60 سال سے بڑھا کر 64 سال کردی گئی ہے۔ وفاقی کابینہ کی جانب سے چاروں سروسز چیفس کی ریٹائرمنٹ کی عمر میں اضافے کیلئے آرمی ایکٹ کے سیکشن 172 میں ترمیم کی گئی ہے۔ اسی ترمیم کی روشنی میں آرمی ایکٹ کے سروسز رولز کی دفعہ 155 میں ترمیم کی منظوری بھی دی گئی ہے۔

مزید : اہم خبریں /قومی