خیبرپختونخوا میں 2020 کے دوران تھیلیسمیامیں مبتلا 60نئے کیسز سامنے آگئے

خیبرپختونخوا میں 2020 کے دوران تھیلیسمیامیں مبتلا 60نئے کیسز سامنے آگئے

  

پشاور(سٹی رپورٹر)خیبرپختونخوا میں 2020کے دوران تھیلیسمیامیں مبتلا 60نئے کیسز سامنے آگئے اوران متاثرہ بچوں کو حمزہ فاؤنڈیشن ویلفیئرہسپتا ل میں رجسٹرڈ کیا گیا جبکہ ہیموفیلیا کے 3اوردیگرامراض خون میں مبتلا 4مریضوں کو رجسٹرڈ کیاگیا۔ حمزہ فاؤنڈیشن کے سالانہ اعدادوشمارکیمطابق ایک سال میں 12225عطیات خون کے مفت بیگس مریضوں کو دیئے گئے جن میں 4467بیگس تھیلیسیمیا، 2540 ہیموفیلیا جبکہ 5218بیگس سرکاری ونجی ہسپتالوں کو فراہم کئے گئے۔سکریننگ کے بعد ہیپاٹائٹس بی کے 850،ہیپاٹائٹس سی کے 64اور ایچ آئی وی کے تین مریضوں کو بھی خون عطیہ کیا گیا۔ادارے میں کل 67نئے مریض رجسٹرڈ کئے گئے۔ایک سال میں ایسی 27حاملہ خواتین جنکے پہلے بچے بھی تھیلیسمیامیں مبتلاہیں انکے سی وی ایس ٹیسٹ کئے گئے اورممتاز مذہبی سکالر مفتی تقی عثمانی کے فتوے کی روشنی میں پیدائش سے قبل تھیلیسمیامیجر میں مبتلا8بچوں کا اسقاط حمل کیا گیا۔اس طرح چھ افراد میں ملیریا کی تشخیص بھی کی گئی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -