ارکان کے 6130سوالات، وزارتیں 5239کے جوابات نہ دے سکیں، قومی اسمبلی کی سالانہ رپورٹ

  ارکان کے 6130سوالات، وزارتیں 5239کے جوابات نہ دے سکیں، قومی اسمبلی کی سالانہ ...

  

اسلام آباد(آ ئی این پی) قومی اسمبلی نے سال 2020 کے دوران مشترکہ اجلاسوں سمیت 123 دن کام کیا، سال کے دوران 58 سرکاری بل اور 14 آرڈیننس پیش کیے گئے جبکہ 31 سرکاری بل قومی اسمبلی کے اجلاسوں کے دوران منظور ہوئے، قومی اسمبلی نے 34 سرکاری اور 2 نجی ممبروں کے قانون بھی ایکٹ بنے،79 نجی ممبران بل ایوان میں پیش کیے گئے جن میں سے 06 منظور کیے گئے،سال کے دوران، مختلف قومی اور بین الاقوامی امور پر 19 قراردادیں منظور کی گئیں جن میں سے سب سے زیادہ اہمیت کی حامل اسلامو فوبیا کے تدارک، اسمبلی کے قیام کی 73 ویں سالگرہ اور ختم نبوت کے حوالے سے قرار دیں تھیں، 2020سال کے دوران ارکان کی جانب سے  6130 سوالات موصول ہوئے جن میں سے 891 سوالات کے جوابات قومی اسمبلی کے اجلاسوں کے دوران دیئے گئے۔جمعرات کو قومی اسمبلی کی جانب سے جاری کی گئی جس کے مطابق ایوان نے قومی اہمیت کے امور اور تحاریک التوی کے ذریعے بحث اور ممبران کی طرف سے پوچھے گئے سوالات اور قائمہ کمیٹیوں کے ذریعے سماجی و اقتصادی امور پر توجہ مزکور رکھی۔ سال 2020 کے دوران، ایوان کی قانون سازی کے شعبہ میں ایوان کی کارکردگی قابل ذکر رہی۔ سال کے دوران، 6130 سوالات موصول ہوئے جن میں سے 891 سوالات کے جوابات قومی اسمبلی کے اجلاسوں کے دوران دیئے گئے۔ قاعدہ 259 کے تحت کل 460 تحریکیں سیکرٹیریٹ کو موصول ہوئیں جن میں سے 40 کو مسترد کیا گیا، 54 کو ایوان کے سامنے لایا گیا، جس میں سے 6 تحریکوں پر بحث ہوسکی۔ 

سالانہ رپورٹ

مزید :

صفحہ آخر -