2020ء حکومت نے ناکامیوں اور بیڈ گورننس کے ریکارڈ قائم کئے: سراج الحق

       2020ء حکومت نے ناکامیوں اور بیڈ گورننس کے ریکارڈ قائم کئے: سراج الحق

  

لاہور (نمائندہ خصو صی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ2020 ء میں ملک نے نہیں مافیاز نے خوب ترقی کی، کشمیر پر جنگ کے بغیر پسپائی سے لے کر تعلیم، صحت اور زراعت کی تباہی تک حکومت نے ناکامی اور بیڈ گورننس کی ہر مثال قائم کی،دہشتگردی کے واقعات بڑھے، خواتین و بچوں پر حملوں میں اضافہ ہوا، حکمرانوں نے گزشتہ پانچ ماہ میں 4.6 ارب ڈالر قرض لے کر 73 سالہ ریکارڈ توڑا اور ملک کی آزادی و خود مختاری کا آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کے ہاتھوں سودا کیا،فیصلہ کرنا مشکل ہے کہ 2020 ء میں حکومت نے کس ادارے کو سب سے زیادہ نقصان پہنچایا،اگر ظلم اسی طرح جاری رہا تو غریبوں کے ہاتھ جلد حکمرانوں کے گریبانوں پر ہوں گے، پی ٹی آئی کہتی ہے کہ فوج اورحکومت ایک پیج پر ہیں،میں کہتاہوں کہ قوم اور فو ج کو ایک پیج پر ہوناچاہیے۔گزشتہ روزی منصورہ میں جاری تعمیر سیرت کیمپ سے خطاب اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سراج الحق نے کہاکہ ساری دنیا میں وبا کے دوران مارکیٹس بند اور تعلیمی اداروں کو کھلا رکھنے کی بھر پور کوششیں ہوتی رہیں جبکہ ہمارے ہاں الٹا چکر چلتا رہا۔ جب پی ٹی آئی نے اقتدار سنبھالا تو دو کروڑ بچے سکولوں سے باہر تھے،اب تعداد اڑھائی کروڑ تک پہنچ گئی ہے۔ حکومت نے جو سلوک تعلیمی اداروں کے ساتھ کیا وہی صحت کے شعبہ اور ہسپتالوں کے ساتھ کیا۔ حکمرانوں نے زراعت کو تباہ کرنے میں بھی کوئی کسر اٹھا نہیں رکھی۔ گندم، کپاس، چینی اہم فصلوں کی پیدوار میں کمی ہوئی۔ زرعی مداخل کی قیمتیں آسمانوں سے باتیں کر رہی ہیں۔ زراعت سے منسلک دس کروڑ آبادی بے یارو مدد گار ہے۔ وزیراعظم نے وعدے کیے تھے کہ وہ قر ض نہیں لیں گے، خود کشی کرلیں گے لیکن اس حکومت نے صرف گزشتہ پانچ ماہ کے دوران ساڑھے چار ارب ڈالر قرض لے کر 73 سالہ ریکارڈ توڑ دیا۔ ایک کروڑ نوکریاں دینے کے دعوے داروں نے سٹیل ملز کے ہزاروں ملازمین سمیت ملک بھر میں لاکھوں پڑھے لکھے نوجوانوں کو بے روزگار کیا۔ تبدیلی کے نام پر عوام کو بے وقوف بنانے والوں نے بیوروکریسی کو ہی بار بار تبدیل کیا اور وزیروں اور مشیران کے عہدوں میں تبدیلی لائی گئی۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ امریکہ کی فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی سے نیب کے معاہدے کو فوری ختم کیا جائے۔ پہلے ہی ملک کو آئی ایم ایف اور ورلڈ بنک کی غلامی میں دھکیلنے کی کوئی کسر باقی تھی کہ اب امریکی ایجنسیوں کو بھی ملک میں مداخلت کی کھلی چھٹی دی جارہی ہے۔ 

سراج الحق  

مزید :

صفحہ آخر -