10بھٹہ مزدور بچوں کی عدم بازیابی پراسلام آباد ہائیکورٹ برہم، کل تک بچے بازیاب کروانے کا حکم 

  10بھٹہ مزدور بچوں کی عدم بازیابی پراسلام آباد ہائیکورٹ برہم، کل تک بچے ...

  

 اسلام آباد(آن لائن)اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہرمن اللہ کی عدالت نے عدالتی احکامات کے باوجود اینٹوں کے بھٹوں سے جبری مشقت والے دس بچوں کی عدم بازیابی پر پولیس اور انتظامیہ پر شدید برہمی کا اظہارکرتے ہوئے کل تک بچوں کو بازیاب کروا کر عدالت پیش کرنے کی ہدایت، بچوں کی عدم بازیابی کی صورت میں اسلام آبادکے کمشنراور آئی جی عدالت پیش ہوں۔گذشتہ روز سماعت کے دوران ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات اور دیگر عدالت پیش ہوئے،ایس ایچ او نے کہاکہ اینٹوں کے بھٹے پر چھاپہ مارا مگر بچے وہاں موجود نہیں تھے،چیف جسٹس نے کہاکہ آپ کہہ رہے ہیں  بچے غائب ہیں اور آپ نے ایف آئی آر تک نہیں کاٹی، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ ریاست کا جواب وہ نہیں جو کسی بڑے آدمی کے بچوں کے گم ہونے پر ہوتا ہے،کسی بڑے آدمی کا بچہ غائب ہوتا تو پوری ریاست ڈھونڈ رہی ہوتی،سیکرٹری داخلہ کا بچہ غائب ہو جاتا تو پولیس کیا کرتی؟یہ بوڑھی غریب ماں عدالت میں کھڑی ہے،یہ تو وہ لوگ ہیں جن کی عدالتوں تک رسائی بھی ناممکن بنا دی گئی ہے،عدالت نے کہاکہ اگر بچے بازیاب نہیں ہوتے تو آئی جی اور چیف کمشنر خود پیش ہوں اور سماعت  کل2جنوری تک ملتوی کردی۔

 اسلام آباد ہائیکورٹ

مزید :

صفحہ آخر -