صوبے میں آٹا اور گندم وافر مقدار میں موجود ہے،میاں خلیق الرحمان

صوبے میں آٹا اور گندم وافر مقدار میں موجود ہے،میاں خلیق الرحمان

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیر اعلی خیبر پختونخوا کے مشیر برائے خوراک میاں خلیق الرحمن نے بنوں،کرک اور لکی مروت کا دورہ کیا۔ اس موقع پر انہوں نے کمشنر بنوں کے دفتر میں بنوں ڈویژن کے انتظامی اور محکمہ خوراک کے افسران کے اعلی سطحی اجلاس کی صدارت کی۔ اجلاس میں کمشنر بنوں شوکت یوسفزئی کی جانب سے ڈپٹی کمشنر کیپٹن ر زبیر احمد نے قیمتوں کو کنٹرول کرنے کے حوالے سے اقدامات کے بارے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ اس موقع پر محکمہ خوراک کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر نے سبسڈائزڈ آٹے کی تقسیم کے بارے میں تفصیلی رپورٹ پیش کی۔ اس موقع پر آر پی او بنوں اول خان بھی موجود تھے۔ مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن نے بنوں ڈویژن میں انتظامیہ اور محکمہ خوراک کی مجموعی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کیا۔ مشیر خوراک میاں خلیق الرحمن نے کہا کہ صوبے میں گندم اور آٹے کے وافر مقدار موجود ہے۔ اور اس سلسلے میں آئندہ سال کے لئے مربوط حکمت عملی وضع کی گئی ہے۔ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلی محمود خان کی خصوصی ہدایات پر عوام کو ریلیف پہنچانے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ذخیرہ اندوزوں اور ناجائز منافع خور مافیا کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائیگا۔ صوبہ بھر کے تمام اضلاع کی بھرپور مانیٹرنگ کا نظام فعال بنادیا گیا ہے۔ کسی قسم کی  کوتاہی پر بلا امتیاز کاروائی کی جائیگی۔ عوام براہ راست محکمہ خوراک کو شکایات ارسال کریں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سالانہ کروڑوں روپے سبسڈی ادا کر رہی ہے تاکہ عوام کو اشیائے خوردونوش مناسب قیمت پر مل سکیں۔ انہوں نے بنوں، لکی مروت کے متعدد فلور ملز کا بھی دورہ کیا اور سرکاری آٹے کا معیار چیک کیا۔ انہوں نے ضلعی افسران اور محکمہ خوراک کے افسران کو ناقص آٹا تیار کرنے والے ملز کے خلاف سخت قانونی کاروائی کے احکامات جاری کئے۔ انہوں نے کہا کہ معیار اور مقدار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -