خواجہ آصف 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے، گھر سے کھانا منگوانے کی استدعا منظور 

  خواجہ آصف 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے، گھر سے کھانا منگوانے کی ...

  

 لاہور (نامہ نگار)احتساب عدالت کے ایڈمن جج جوادالحسن نے آمدنی سے زائد اثاثہ جات کیس میں مسلم لیگ (ن)کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر خارجہ خواجہ آصف کو 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کی تحویل میں دے دیاہے،عدالت نے خواجہ آصف کی گھرسے کھانامنگوانے کی استدعا بھی منظورکرلی ہے۔گزشتہ روزخواجہ آصف کو نیب کی تفتیشی ٹیم نے احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا، خواجہ آصف نے کمرہ عدالت میں اپنے وکالت نامہ پر دستخط کئے،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو خواجہ آصف روسٹرم پر آگئے، نیب کی جانب سے پراسکیوٹر عاصم ممتاز نے عدالت کو بتایا کہ23 جون 2020 ء کو خواجہ آصف کے خلاف انکوائری کا آغاز کیا گیا، خواجہ آصف کو متعدد مواقع دیئے گئے لیکن وہ نیب کومطمن نہیں کر سکے، خواجہ آصف اپنے 81 کروڑ 20 لاکھ کے اثاثوں سے متعلق مطمئن نہیں کر سکے،تفتیشی افسر نے عدالت کوبتایا کہ جب خواجہ آصف سیاست میں آئے اس وقت ان کے اثاثے 51 لاکھ تھے، عدالت سے استدعاہے کہ خواجہ آصف کے تفتیش کے لئے 15روزہ جسمانی ریمانڈ نیب کے حوالے کیا جائے،خواجہ آصف نے عدالت کو بتایا کہ اپریل 2018 ء میں ان کے خلاف انکوائری کا آغاز کیاگیا،پہلے پنڈی میں انکوائری بھگتی اب لاہور میں شروع کر دی گئی ہے،میں 7 مرتبہ پارلیمنٹ کا ممبر بناہوں،صرف 81 کروڑ نکالا، کچھ نکال تو لیتے،وزیراعظم صاحب کے کہنے پر سب کچھ کیا جا رہا ہے،دوران سماعت فاضل جج نے خواجہ آصف کے بیان پر ان سے کہا کہ جب میاں شہباز شریف یہاں تقریر کرتے تھے تو دل کرتا تھا کہ قومی اسمبلی کا سپیکر بن جاؤں،فاضل جج نے نیب پراسکیوٹر سے کہا کہ یہ پہلا ریمانڈ ہے اس لئے نیب کی استدعا منظورکر لیتے ہیں،خواجہ آصف کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ 36 دفعہ پنڈی جبکہ لاہور میں 5 مرتبہ بلایا، ہم نے تمام ریکارڈ فراہم کیا جو نیب نے مانگا دیا، یہ جو ریکارڈ آپ کے سامنے پڑا ہے وہ بھی میرے  موکل نے نے فراہم کیاہے، عدالت نے وکیل صفائی سے کہا کہ یہ تو روٹین کی باتین ہیں بتائیں اس پر اچنبہ کیا ہے؟ فاضل جج نے وکیل صفائی سے استفسار کیا کہ آپ کہاں سے ہیں؟ خواجہ آصف کے وکیل نے بتایا کہ وہ سیالکوٹ سے ہیں،جب دھماکہ ہوا تھا تو آپ کی میز کے نیچے چھپ گیا تھا،وکیل صفائی کی اس بات پر عدالت کشت زعفران بن گیا،فاضل جج نے کہاکہ میرے پاس جب بھی کوئی ملزم لایا جاتا ہے کہا جاتا ہے کہ جوڈیشل کر دیں، جب آپ کو گرفتار کیا ہے تو تفتیش تو کرنے دیں،خواجہ صاحب یہ تو بھگتنا ہوگا، عدالت نے کہا کہ یہ جمع تفریق کا معاملہ لگتا ہے خواجہ صاحب آپ کاریمانڈ دے دیتے ہیں، آپ یہ جمع تفریق اپنے سامنے کرائیں، وکیل صفائی کے بولنے پر عدالت نے کہا کہ میاں شہباز شریف کا کیس دیکھ چکا ہوں اس لئے مجھے نہ سمجھائیں،میں نے آپ کے اور ان کے حقوق کا تحفظ کرنا ہے، خواجہ آصف کے وکیل کی جانب سے عدالت میں گھر سے کھانا منگوانے کی درخواست دائر کی گئی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے کہا کہ گھرکھانافراہم کرنے،فیملی اور وکلا ء سے ملاقات کا حکم بھی دے دیتے ہیں،اس کیس کی مزید سماعت13جنوری 2021ء کوہوگی،خواجہ آصف کی احتساب عدالت پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے،لیگی کارکنوں نے خواجہ آصف کی پیشی کے موقع پر حکومت مخالف نعرے بازی بھی کی۔

خواجہ آصف 

مزید :

صفحہ اول -