بھارت کا جارحانہ رویہ علاقائی امن و سلامتی کےلیے خطرہ ہے: دفترخارجہ

بھارت کا جارحانہ رویہ علاقائی امن و سلامتی کےلیے خطرہ ہے: دفترخارجہ
بھارت کا جارحانہ رویہ علاقائی امن و سلامتی کےلیے خطرہ ہے: دفترخارجہ
سورس:   File

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان نے بھارتی سینئر سفارت کار کو وزارتِ خارجہ میں طلب کرتے ہوئےسیز فائر معاہدے کی مسلسل خلاف ورزی پر شدید احتجاج کیا  اور  کہا ہے کہ بھارت کا جارحانہ رویہ علاقائی امن و سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔

ترجمان دفترخارجہ کے مطابق بھارتی قابض افواج نے 30 دسمبر کو لائن آف کنٹرول پر فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں کوٹ کٹیرا کا رہائشی محمد سرفراززخمی ہوا۔ ترجمان دفترخارجہ کا کہنا ہے کہ بھارتی فورسز ایل او سی پر شہری آبادیوں پر بھاری ہتھیاروں کا استعمال کررہی ہے۔

ترجمان دفترخارجہ نے بتایا کہ گزشتہ سال کے دوران بھارتی قابض فوج نے3097 مرتبہ سیز فائرمعاہدے کی خلاف ورزی کی جس کے نتیجے میں 28 معصوم شہری شہید جبکہ 257 زخمی ہوئے۔ 

ترجمان دفترخارجہ نے بھارتی سفارتکار کو واضح کیا کہ بھارت کا جارحانہ رویہ علاقائی امن و سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔ پاکستان نے مطالبہ کیا کہ بھارت اقوام متحدہ مبصر مشن کو صورتحال کا جائزہ لینے کی اجازت دے۔ 

مزید :

قومی -