تجارتی مراکز سمیت اہم شاہراہوں پر ٹریفک جام معمول بن گیا

  تجارتی مراکز سمیت اہم شاہراہوں پر ٹریفک جام معمول بن گیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سکھر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)سکھر میں تجارتی مراکز سمیت اہم شاہراہوں پر ٹریفک جام معمول بن گیا، شہریوں کو آمد و رفت میں شدید مشکلات کا سامنا، سماجی حلقوں میں تشویش کی لہر، بالا حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق سندھ کے تیسرے بڑے شہر سکھر اور اسکے گردنواح کے علاقوں میں ضلعی انتظامیہ اور میونسپل کارپوریشن کی مسلسل مجرمانہ غفلت کے بعد اب ٹریفک پولیس کی رشوت وصولی کی وجہ سے شہریوں کو ٹریفک جام کے مسائل سے چھٹکارا نہیں مل سکا ہے شہر کے مختلف مقامات،شاہراؤں اور راستوں پر تعینات ٹریفک پولیس اہلکاروں کی رشوت وصولی کے باعث تجارتی و کاروباری مراکز میں نوانٹری بورڈ آویزاں کے باوجود گاڑیوں کو آنے و جانے کی اجازت کیساتھ انہیں پارک کرنے کی بھی سہولیات فراہم کی جارہی ہے، سڑکوں پرکھڑی بے ترتیب اور نو پارکنگ ایریا میں گاڑیوں کی وجہ سے ٹریفک کی روانی میں مسلسل خلل پڑنے سمیت کئی کئی گھنٹوں ٹریفک جام ہونا معمول بنتا جارہا ہے جبکہ سکھر میونسپل کارپوریشن کی مجرمانہ غفلت کے باعث مصروف ترین تجارتی مرکز گھنٹہ گھر، اسٹیشن روڈ، گلیمرموبائل مارکیٹ رشنا مارکیٹ، گھنٹہ گھر چاڑی، پوسٹ آفس مینارہ روڈ، نیم کی چاڑی، گھنٹہ گھر چاڑی،شالیمار روڈ، شہید گنج، بیراج روڈ، شکارپور روڈ، ریس کورس روڈ،ایوب گیٹ،اناج بازار، نیو گوٹھ سمیت شہر کے اکثر علاقوں میں ٹریفک جام کی وجہ سے نا صرف پیدل چلنے والوں بلکہ تجارتی و کاروباری مراکز میں خریداری کے لئیآنے والے افراد کو بھی آمدورفت و خریداری میں شدید دشواری اور پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے سکھر کے شہریوں سمیت سماجی حلقوں نے کمشنر سکھر،ڈپٹی کمشنر سکھر،ایڈمنسٹریٹر بلدیہ اعلی سکھر، ایس ایس پی سکھر اور متعلقہ محکموں کے افسران سے مطالبہ شہریوں ک ٹریفک کے مسائل سے نجات دلانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں۔