کوئی بھی شخص اپنے شعبے کے علاوہ کسی دوسرے شعبے کے نظریات سو فیصد درست بیان نہیں کر سکتا

کوئی بھی شخص اپنے شعبے کے علاوہ کسی دوسرے شعبے کے نظریات سو فیصد درست بیان ...
کوئی بھی شخص اپنے شعبے کے علاوہ کسی دوسرے شعبے کے نظریات سو فیصد درست بیان نہیں کر سکتا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 مصنف: ڈاکٹر صائمہ علی
قسط:96
فنِ مصوری کا علم:
”پریشر ککر“ میں فن مصوری پر کی جانے والی گفتگو اور نظریات کے بارے میں عام ناقدین اور لوگوں کی رائے ہے کہ یہ سالک کی فن مصوری سے گہری واقفیت اور علمیت کا مظہر ہے مثلاً ڈاکٹر سلیم اختر کے بقول:
”شکاگو میں فطرت کی آرٹ کے بارے میں اپنے اساتذہ سے گفتگو کے حوالے سے لگتا ہے کہ اگر صدیق سالک عملی طور پر مصور نہیں ہیں تو کم از کم آرٹ کے سلسلے میں ان کا مطالعہ بہت وسیع ہے۔“
لیکن پنجاب یونیورسٹی کے فائن آرٹس کے شعبے کے اسسٹنٹ پروفیسر ظفر اللہ کا خیال اس سے بہت مختلف ہے وہ ناول میں فن مصوری پر کی گئی گفتگو اور مصنف کے اس کے متعلق شعبے کے نظریات سے شدید اختلاف کرتے ہیں ان کے مطابق:
”فن مصوری پر مصنف کا Knowledge بہت Superfacial ہے یونیورسٹی میں دئیے گئے لیکچرز Total wrong ہیں۔ یہ ہمارا المیہ ہے کہ فنون لطیفہ کے مختلف شعبے ایک دوسرے کے شعبے کا بہت کم علم رکھتے ہیں مصور وں کو ادب کی سمجھ نہیں اور ادیبوں کو مصوری کا پتہ نہیں یہی صورت ”پریشر ککر“ میں نظر آتی ہے۔“
ناول میں بیان کیے گئے یونیورسٹی کے ماحول کے متعلق ان کا کہنا ہے کہ یہ تقریباً درست ہے مسز نادرہ شیخ کے حقیقی کردار کا نام مسز اینا مولکا ہے جن کی اس ادارے کے لیے بڑی خدمات ہیں وہ احمد شیخ سے شادی کے بعد مسز شیخ کہلائیں وہ 1940ءسے1972ءتک یونیورسٹی میں رہیں۔ وہ بھی ہاتھ میں walking stick رکھا کرتی تھیں لیکن بیان کردہ منفی رنگ ان میں نہیں تھا۔
غلام رسول نے خط میں واضح کیا ہے کہ سالک ان سے فن مصوری پر گفتگو کرتے تھے لیکن انہوں نے کبھی اس بارے میں کچھ لکھ کر نہیں دیا۔ اس لیے سالک نے اس زبانی گفتگو سے اخذ کردہ معلومات کے ذریعے یہ نظر یات دیئے جو بہت مستند نہیں ہو سکتے۔ لیکن یہ امر بھی ملحوظ رکھنا چاہیے کہ کوئی بھی شخص اپنے شعبے کے علاوہ کسی دوسرے شعبے کی پیشہ وارانہ گفتگو اور نظریات سو فیصد درست بیان نہیں کر سکتا۔( جاری ہے ) 
نوٹ : یہ کتاب ” بُک ہوم“ نے شائع کی ہے ۔ ادارے کا مصنف کی آراءسے متفق ہونا ضروری نہیں ۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں )

مزید :

ادب وثقافت -